اسلامی ممالک کے چیمبرز کا اجلاس پاکستان میں نہ ہونا بدقسمتی ہے،بزنس مین پینل

84

کراچی(اسٹاف رپورٹر)فیڈریشن پاکستان چیمبرز آف کامرس کی ا یگزیکٹو کمیٹی ممبر اور سابق نائب صدر مرزا عبد الرحمان نے کہا ہے کہ امسال اسلامک ممالک کے چیمبرز کا اجلاس پاکستان میں نہ ہونا پاکستان کے لیے بد قسمتی ہے کیونکہ ایف پی سی سی آئی کا کردار نہ ہونے کی وجہ سابقہ میٹنگ کی کوئی بات سامنے نہیں آئی اور نہ ہی سابقہ میٹنگ کے منٹس پاکستان کو دئے گے۔ اسلامی ممالک کے چیمبر کے اجلاس میں پاکستان کے وزیر اعظم یا صدر مملکت یا وزیر خارجہ کو صدارت کرنا تھی اور یہ پاکستان کے لئے بہت اعزاز کی بات ہوتی کہ اسلامی مماک کے سربراہ پاکستان آتے، تاجروں اور پاکستان کی کاروباری اداروں کے ساتھ دنیا کے 55 مسلم ممالک کے ساتھ تجارت کے لین دین کی باتیں ہوتی ، پاکستان کی بزنس کمیونٹی کو دنیا کے مسلم ممالک کے ساتھ اپنی امپورٹ اور ایکسپورٹ کی وسیع منڈیاں ملتیں اور پاکستان کی تاجربرادری موجودہ یوبی جی کی کچن کابنیہ کو سلام پیش کرتی، ان سے محروم ہونا پاکستان کے کاروباری طبقہ کی بد نصیبی ہے۔چونکہ اس سربراہ میٹنگ میں کانفرنس کا افتتاح اس ملک کے صدر یا وزیر اعظم کو کرنا وتا ہے چنانچہ اہم موقع گنوا دیا گیا۔پریمئیرادارہ ایف پی سی سی آئی پر نااہل، خوشامدی اور فوٹو سیشن لوگوں کا قبصہ ہے جن سے اتنا نہ ہوسکا کہاا یف سی سی آئی کا صدر یا کوئی نائب صدر ہی قاہرہ (مصر) میں ہونیوالی اسلامی سربراہی کانفرنس میں شرکت کرتا ۔ْ فیڈریشن پاکستان کا گزشستہ اجلاس بھی کورم پوار نہ ہونکی وجہ سے مکمل نہ ہو سکا جس سے بزنس کمیونٹی کی نظر میں اس پریمیئر ادارہ کی اہمیت کا اندازہ ہو تا ہے۔ترجمان بزنس مین پینل احمد جواد نے اس موقع پر کہا کہ تقریبا تیس سال پہلے ایک اسلامی چیمبر کا قیام عمل میں لایا گیا تھا ، پاکستان میں لاء اینڈ آرڈر کی صورت حال کی وجہ سے ایک بھی کانفرس پاکستان میں کبھی منعقد نہ ہو سکی۔، گزشتہ سال میں فیصلہ ہوا تھا کہ اسلامی ممالک کے چیمبرکا آئندہ اجلاس ستمبر اکتوبر2019 میں پاکستان میں منعقد ہو گا۔تیس سال بعد یہ بڑے فخر اور اعزاز کی بات تھی کہ پاکستان میں یہ اجلاس2019میں ہونا تھا گزشتہ اجلاس قاہرہ( مصر) میں ہوا تھا۔پاکستان سیٖٖٖٖ ایف سی سی آئی کا کوئی عہدیدار نہیں گیا جبکہ صرف سیکرٹری جنرل ایف پی سی آئی خود ہی چلے گئے جبکہ صدرایف پی سی سی آئی کو اس اجلاس میں جانا چاھئے تھا ۔اسلامک چیمبر میں فیڈریشن پاکستان کا گرتا ہوا کردار یو بی جی کیـ اعلیٰ خدمات کا منہ بولتا ثبوت ہے۔مرزا عبد الرحمان اوراحمد جواد نے وزیر اعظم پاکستان ،کامرس منسٹر عبد الزاق دائود وزیر خارجہ شاہ محمود قریشی سے اپیل کرتے ہوئے کہا کہ ایف پی سیس سی آئی مین بر سر اقتدار گروپ کی نااہلی کی وجہ سے عالمی فورم پر پاکستان کی جگ ہنسائی ہو رہی ہے اس نااہل قیادت کو فوری ختم کیا جائے کیونکہ ملکی و غیر ملکی تجارت کے فروغ کی ذمہ داری ایف پی سی سی آئی کی ہے ۔