تاجر برادری نے اقتصادی ترقی کو کاروبار دوست ٹیکس پالیسیوں سے مشروط کردیا

32

کراچی(اسٹاف رپورٹر )دالوں،چاول،چینی، مصالحہ جات،گندم و دیگر اجناس کے تھوک تاجروں،درآمدکنندگان وبرآمدکنندگان کی نمائندہ کراچی ہول سیل گروسرز ایسوسی ایشن(کے ڈبلیو جی اے)کے سرپرست اعلیٰ انیس مجیداور چیئرمین ملک ذوالفقار نے ملک کو اقتصادی ترقی کی شاہراہ پر گامزن کرنے کے لیے کاروبار دوست ٹیکس پالیسیوں اور ٹیکس نظام کو سہل بنانے سے مشروط کیا ہے۔نئے چیئرمین ایف بی آر شبر زیدی کے ابتدائی اقدامات کی تعریف کرتے ہوئے انہوں نے کہاکہ زائد ٹیکسوں کے بوجھ کے ساتھ ساتھ تاجربرادری کا سب سے بڑا مسئلہ ایف بی آر حکام کی جانب سے ہراساں کیا جانا ہے اب جبکہ نئے چیئرمین نے ایف بی آر حکام کو ہدایت کی ہے کہ ٹیکس گزاروں کو ہراساں نہ کیا جائے یقینا یہ خوش آئنداقدام ہے مگر شبر زیدی کو اپنی دی گئی ہدایات پر عمل درآمد بھی یقینی بنانا ہوگا تب ہی ایف بی آر میں تاجروں کو ہراساں کرنے کاکلچر کا خاتمہ ہوگا۔انیس مجید ، ملک ذوالفقار نے مزیدکہاکہ نئے چیئرمین ایف بی آرکی جانب سے پیشگی اطلاع کے بغیر کسی شہری کے بینک اکائونٹس منجمد نہ کرنے اور بینک اکاؤنٹ منجمد کرنے سے 24 گھنٹے پہلے چیئرمین ایف بی آر سے اجازت لینے کے اقدام سے تاجربرادری کا کھویا ہوا اعتماد بحال ہوگا ۔انہوںنے کہاکہ شبرزیدی ایک منجھے ہوئے ماہر ٹیکس ہیں جو ٹیکس گزاروں اور تاجربرادری کی مشکلات سے بخوبی واقف ہیں۔
لہٰذا تاجربرادری کو امید ہے کہ وہ حقیقی معنوں میں شکایات کا ازالہ کریں گے اور کاروبار دوست ٹیکس پالیسیاں متعارف کروائیں گے۔