ہنگورجہ عدالتی احکامات نظر انداز ،محکمہ جنگلات کچے کی اراضی واگزار نہ کراسکا

52

ہنگورجہ(نمائندہ جسارت)عدالت عظمیٰ کے احکامات محکمہ جنگلات نے ہوا میں اڑا دیے، خیرپور ضلع کے سگیوں کے کچے میں محکمہ جنگلات کی ہزاروں ایکڑ زمین پر ابھی تک بااثر افراد نے قبضہ کر کے اپنی فصلوں کی بوائی شروع کردی،محکمہ جنگلات کے افسران بھی بااثر افراد کے ساتھ مل گئے، جیے سندھ پورہیت سنگت کی جانب سے محکمہ جنگلات کی ہزاروں ایکڑ زمین پر ہونے والا قبضہ ختم کرانے اور عدالت عظمیٰ کے احکامات پر عمل کرانے کے لیے احتجاج کیا۔تفصیلات کے مطابق سپریم کورٹ آف پاکستان میں محکمہ جنگلات کی ہزاروں ایکڑ زمین پر قبضہ ختم کرانے کے احکامات جاری کیے لیکن محکمہ جنگلات خیرپور اور ضلعی انتظامیہ نے سپریم کورٹ آف پاکستان کے احکامات پر عمل نہیں کیا جس کی وجہ سے خیرپور ضلعے کے سگیوں کے کچے میں ہزاروں ایکڑ محکمہ جنگلات کی زمین پر بااثر افراد نے کئی برسوں سے قبضہ کر کے اپنی فصلوں کی بوائی شروع کر دی ہے۔ باوثوق ذرائع کے مطابق محکمہ جنگلات کے افسران نے بااثر افراد کے ساتھ مل کر ان کو زمین پر قبضہ جاری رکھنے کی اجازت دے دی ہے۔ سگیوں کے محکمہ جنگلات کی کیٹی موسو بگھیو،کیٹی منگی ماڑی،کیٹی ابڑا پوتا، کیٹی چھتو چنو، نواڑو بیلو سمیت مختلف علاقوں میں محکمہ جنگلات کی زمین پر ابھی تک قبضہ برقرار ہے لیکن ضلعی انتظامیہ اور محکمہ جنگلات نے کوئی بھی کارروائی کرنے کے لیے تیار نہیں۔ جس کی وجہ سے ہزاروں ایکڑ پر بااثر افراد نے کپاس کی بوائی شروع کر دی ہے۔ دوسری جانب جیے سندھ پورہیت سنگت کے رہنما عاشق چنو، غلام قادر چنو کی قیادت میں احتجاجی مظاہرا کیا ۔ مظاہرین نے کہا کہ عدالت عظمیٰ کے واضح احکامات کے باوجود ہزاروں ایکڑ اراضی پر محکمہ جنگلات کی زمین پر قبضہ برقرار ہے ۔انہوں نے مطالبہ کیا کہ سگیوں کے کچے میں محکمہ جنگلات کی زرعی زمین پر قبضہ ختم کرایا جائے اور سپریم کورٹ آف پاکستان کے حکم پر عمل کیا جائے۔