جیکب آباد‘ کالے یرقان اور ایڈز کی بیماری پھیلنے پر عوام کا حجاموں کیخلاف کارروائی کا مطالبہ

23

جیکب آباد(نمائندہ جسارت) جیکب آباد میں ایڈز اور کالے یرقان جیسی بڑھتی ہوئی مہلک بیماریوں کے بعد حجاموں کی شامت آگئی، شہریوں نے اتائی ڈاکٹروں اور حجاموں کے خلاف کارروائی مطالبہ کردیا، محکمہ صحت نے اتائی ڈاکٹروں کے بعد حجاموں کے خلاف بھی کارروائی فیصلہ کرلیا۔ تفصیلات کے مطابق جیکب آباد میں ایڈز کے کیسز ظاہر ہونے کے بعد محکمہ صحت کی جانب سے ضلع بھر میں اتائیوں کے خلاف کریک ڈاؤن شروع کردیاگیا ہے اور کئی اتائی ڈاکٹروں کی کلینکوں کو سیل کردیا گیا ہے، محکمہ صحت کی جانب سے اتائی ڈاکٹروں کے خلاف کارروائی کے بعد شہریوں نے مطالبہ کیا ہے کہ اتائی ڈاکٹروں کے ساتھ ساتھ غیر قانونی لیبارٹریز سمیت حجاموں کے خلاف بھی کارروائی کی جائے کیونکہ جان لیوا مہلک امراض کو ایک انسان سے دوسرے انسان میں منتقل کرنے میں جہاں اتائی ڈاکٹر ملوث ہیں وہیں پر حجام اور غیر قانونی لیبارٹریز کا اہم کردار ہے کیونکہ حجام استعمال شدہ بلیڈ کا بار بار استعمال کرتے ہیں اور اسی طرح حجاموں کے زیر استعمال دیگر آلات بھی صاف نہیں ہوتے جس کے باعث جان لیوا مہلک بیماریاں تیزی سے پھیل رہی ہیں، شہریوں کے ایسے مطالبے کے بعد معلوم ہوا ہے کہ محکمہ صحت نے حجاموں کے خلاف بھی کارروائی کا فیصلہ کرلیا ہے اور جلد ٹیم تشکیل دیکر نائیوں کے خلاف کارروائی کی جائے گی،محکمہ صحت کے حکام کا کہنا ہے کہ کالے یرقان اور ایڈز جیسی مہلک بیماریوں کی وجہ اتائی ڈاکٹر ہیں جواستعمال شدہ سرنج سمیت دیگر آلات کا غلط استعمال کررہے ہیں اسی طرح حجام بھی بیماریاں پھیلانے کا باعث بن رہے ہیں اتائی ڈاکٹروں کے ساتھ حجاموں کے خلاف کارروائی کی جائے گی، اس سلسلے میں پی ایم اے کے رہنما ڈاکٹر اے جی انصاری نے کہا کہ اتائی ڈاکٹروں سمیت حجام کالے یرقان، ایڈز سمیت دیگر جان لیوا بیماریاں پھیلا رہے ہیں اس لیے بیماریاں پھیلانے والے حجاموں کی حجامت کی جائے،انہوں نے کہا کہ حجام اور بیوٹی سیلون پر استعمال ہونے والی اشیاء جن میں کنگا، استرا، استعمال شدہ بلیڈ اور غیر معیاری کاسمیٹک شامل ہیں جو بہت سی جان لیوا بیماریوں کی سب سے بڑی وجہ بن رہے ہیں، انہوں نے ضلع انتظامیہ سے مطالبہ کیا کہ ملک وقوم کو کالے یرکان اور ایڈز جیسی جان لیوابیماریوں سے بچانے کے لیے حجام اور بیوٹی سیلونز کو رجسٹرڈ کیا جائے اور بیماریاں پھیلانے والے حجاموں کو روکنے میں اپنا فعال کردار ادا کریں،انہوں نے مزید کہا کہ جو حجام پرانا بلیڈ، استرا اور گندا کنگا استعمال کرتا پکڑا جائے تو اس پر فوری طور پر مقدمات درج کیے جائیں اور حجاموں اور سیلونز پر کام کرنے والوں کا میڈیکل ٹیسٹ کرایاجائے تاکہ جان لیوا بیماریوں سے بچا جاسکے۔