چوکنا رہیں، دشمن تاک میں ہے

105

بلوچستان دہشت گردوںکے نشانے پر ہے ۔ پیر کو بھی کوئٹہ میں دہشت گردی کے واقعے میں پولیس اہلکاروں سمیت چار افراد نے جام شہادت نوش کیا ۔ اس سے قبل گوادر میں پرل کانٹی نینٹل پر حملہ کیا گیا تھا ۔ پاکستان میں دہشت گردی کے واقعات کا اندیشہ اسی وقت ظاہر کردیا گیا تھا جب پلوامہ میں بھارتی فوج پر حملہ ہوا تھا ۔ حالانکہ یہ ثابت ہوگیا تھا کہ پلوامہ میں ہونے والے حملے میں بھارتی ہی ملوث ہیں ، تب بھی بھارت نے پاکستان پر اس کا الزام عاید کرتے ہوئے پاکستان کو جواب دینے کی دھمکی دی تھی ۔ اس کے بعد سے ہی پاکستانی فورسز پاکستان میں الرٹ ہیں ، یہی وجہ ہے کہ بھارت کو پاکستان میں دہشت گردی کرنے کے مواقع اس طرح سے نہیں مل سکے جو اس کی خواہش تھے پھر بھی بھارت لاہوراور پشاور میں دھماکے کرنے میں کامیاب رہا جبکہ سندھ میں دہشت گردی کی کوششیں ناکام بنادی گئیں ۔ بلوچستان میں بھارت اس لیے زیادہ کامیاب ہے کہ بی ایل اے کو بھارت ہی کا بے بی کہا جاتا ہے ۔ ضرورت اس امر کی ہے کہ پاکستانی ایجنسیوں کو مزید چوکنا کردیا جائے کیوں کہ دشمن تاک میں ہے ۔ مودی ہر صورت میں انتخابات جیتنا چاہتا ہے اور اس کی انتخابی مہم کا مرکزی نکتہ ہی پاکستان دشمنی ہے ۔ خود پاکستانی وزیر خارجہ بھی اس امر کا اظہار کرچکے ہیں کہ جب تک بھارت میں انتخابی عمل مکمل نہیں ہوجاتا ، بھارت پاکستان میں دراندازی کرنے سے باز نہیں رہے گا ۔ یہ پاکستانی قوم کے لیے بھی کڑا امتحان ہے کہ وہ مسلط کی گئی دہشت گردی کا سامنا کررہی ہے ۔ضروری ہے کہ بھارت کا یہ دہشت گرد چہرہ دنیا کو دکھایا جائے ۔ اس کے خلاف اقوام متحدہ میں قراردار پیش کی جائے اور بھارت کو پرامن پاکستان میں دہشت گردی کرنے کے جرم میں دہشت گرد مملکت کا درجہ دلوایا جائے ۔ جہاں پر پاکستانی فورسز چوکنا ہیں اور اپنی جان کی قربانیاں دے کر اہل وطن کو تحفظ فراہم کررہی ہیں وہیں پر پاکستان کو سفارتکاری کے محاذ پر بھی متحرک ہوجانا چاہیے ۔ پاکستان میں موجود غیر ملکی سفارتکاروں کو مسلسل صورتحال سے آگاہ رکھا جائے۔ دوست ممالک کے ساتھ اس سلسلے میں خصوصی روابط رکھے جائیں ۔ یہی وقت ہے کہ اقوام متحدہ اور دیگر عالمی اداروں میں بھارت کا مکروہ چہرہ دکھا کر اسے دہشت گرد ملک قرار دلوایا جاسکتا ہے ۔ اس ضمن میں سری لنکا جیسے ممالک بھی پاکستان کے ساتھ ہم آواز ہوسکتے ہیں جو بھارت کی دہشت گردی کا شکار رہے ہیں ۔ سری لنکا میں ایسٹر کے موقع پر ہونے والے دھماکوں کے ڈانڈے بھی بھارت سے ہی ملے ہیں ۔