کیکڑا ون میں ڈرلنگ کا عمل مکمل ،تیل وگیس کے ذخائر کی تلاش میں بڑی کامیابی ملنے کا امکان

169

گہرے سمندر میں کیکڑا ون بلاک میں ڈرلنگ کا عمل مکمل کرلیا گیا، ڈرلنگ مکمل ہونے کے بعد آئندہ 48گھنٹے اہم ہے،  تیل وگیس کے ذخائر کی تلاش میں کامیابی چند دنوں میں متوقع  ہے۔

تفصیلات کے مطابق کراچی کی ساحلی پٹی پر جاری کیکڑاا ون پروجیکٹ میں اہم پیش رفت سامنے آئی، 4 ماہ بعد کراچی سے 280 کلو میٹر دور زیر سمندر تیل و گیس کی تلاش کیلئے مطلوبہ ڈرلنگ کا مرحلہ مکمل کر لیا گیا، کیکڑا ون بلاک میں 5ہزار 470 میٹرگہرائی تک ڈرلنگ کی گئی۔میڈیا رپورٹ کے مطابق ای این آئی کمپنی پر مشتمل جوائنٹ وینچر نے تیل وگیس کی حقیقی مقدار کے تعین کیلئے ٹیسٹنگ کا عمل شروع کردیا ہے ، ٹیسٹنگ کا عمل 48 سے72 گھنٹیمیں مکمل کرلیاجائیگا جبکہ تیل وگیس کی مقدار کی رپورٹ ایک ہفتے میں تیارکی جائیگی۔

ابتدائی اندازے کے مطابق تیل وگیس کے ذخیرہ تک رسائی حاصل کرلی گئی، کیکڑا ون بلاک میں 9 ٹریلین کیوبک فٹ گیس اور خام تیل کی بڑی مقدار موجود ہوسکتی ہے، ڈرلنگ کے عمل کے دوران آپریشن ٹیم کو ہائی پریشر کا سامنا کرنا پڑا۔اگر ذخائر کی مالیت 10ارب ڈالر ہوئی تو گیس و تیل کو نکالنے کیلئے سمندر میں انفراسٹرکچر بچھایا جائے گا جبکہ پاکستان کا پٹرولیم مصنوعات کا امپورٹ بل 6ارب ڈالر سالانہ کم ہونے کی بھی امید ہے۔

دوسری جانب ڈرلنگ مکمل کرنے والی کمپنی کے درآمد کردہ ڈرلنگ بحری جہاز، ہیلی کاپٹرزاور دیگر سامان کو ایف بی آر کی جانب سے تاحال کلئیرنس نہ مل سکی، کسٹمز حکام نے اضافی کسٹمز ڈیوٹی کی مد میں 1ارب 5 کروڑ 96 لاکھ 25ہزار 992 روپے جمع کروانے کی ہدایت کردی ہے۔