نئے سعودی اقامہ پروگرام سے سالانہ 10 ارب ڈالر حاصل ہوں گے

25

ریاض (انٹرنیشنل ڈیسک) سعودی عرب میں معیشت کو بہتر بنانے کے لیے اصلاحات پر عمل کا سلسلہ جاری ہے۔ اس حوالے سے گزشتہ ہفتے مجلس شوریٰ کی جانب سے خصوصی اقامے کے نظام کی منظوری دی گئی تھی۔ منفرد اقامہ پروگرام کے تحت مملکت میں رہایش پذیر تارک وطن کو سعودی عرب میں بعض اضافی مراعات حاصل ہوں گی، جن میں وہ محدود پیمانے پر سعودی عرب میں کاروباری سرگرمیوں میں بھی حصہ لے سکے گا۔ ماہرین کا کہنا ہے کہ پروگرام کے نفاذ سے غیر ملکیوں کی جانب سے بھیجی جانے والی رقوم میں کمی آئے گی اور سعودی معیشت کو سالانہ 10 ارب ڈالر حاصل ہوں گے۔