قرآن کا نظام نافذ اور کلچر عام کرنے سے ہی حالات بہتر ہوں گے،حافظ نعیم

117
امیر جماعت اسلامی کر اچی حافظ نعیم الرحمن رفاہ عام سوسائٹی جوہر پارک میں دعوت افطار سے خطاب کررہے ہیں
امیر جماعت اسلامی کر اچی حافظ نعیم الرحمن رفاہ عام سوسائٹی جوہر پارک میں دعوت افطار سے خطاب کررہے ہیں

کراچی(اسٹاف رپورٹر)امیر جماعت اسلامی کراچی حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ موجودہ حالات میں ہمیں قرآن کے نفاذ کی اجتماعی جدو جہد کر نے اور دین کے فہم کی تحریک کو آگے بڑھانے کی ضرورت ہے ۔ رمضان اور قرآن کا پیغام ہے کہ قرآن سے تعلق کو مضبوط کریں ، قرآن کے نظام کو نافذ اور قرآن کے کلچر کو عام کریں تب ہی ہمارے معاملات اور حالات بہتر ہوں گے ، راستے ہموار ہوں گے۔ان خیالات کا اظہار انہوں نے رفاہ عام سوسائٹی جوہر پارک میں دعوت افطار سے خطاب کرتے ہوئے کیا ۔ اس موقع پر نائب امیر ضلع ائر پورٹ محمد فرحان اور دیگر بھی موجود تھے ۔حافظ نعیم الرحمن نے مزید کہا کہ رمضان نزول قرآن اور تکمیل قرآن کا مہینہ ہے جس میں اللہ نے دین کو مکمل کر دیا ۔ آج قرآن پاک مکمل صورت میں ہمارے پاس موجود ہے یہ کتاب ِ انقلاب ہے جو انسان کے اندر ظاہری اور باطنی طور پر تبدیلی لاتی ہے ۔ روزہ صرف بھوک پیاس کا نام نہیں بلکہ جھوٹ ، دھوکے ، حرام اور دوسروں کی دل آزاری سے خود کو باز رکھنا ہے ۔ حافظ نعیم الرحمن نے کہا کہ رمضان المبارک اپنی رحمتوں و برکتوں کے ساتھ گزر رہا ہے ۔ ضروری ہے کہ ہم اپنے ہر ہر لمحے کو عبادت کے لیے گزاریں اور اپنے معمولات زندگی قرآن کے مطابق بنانے کی کوشش کریں ۔ اس ماہ رمضان میں گزشتہ گناہوں سے توبہ کر نے کی ضرورت ہے اور اللہ تعالی ایسے لوگوں کو پسند کرتا ہے جو گناہوں سے توبہ کرتے ہیں۔ رمضان کے مہینے میں اجتماعی و انفرادی طور پر اللہ کے حکم پر عمل کر نے کی تربیت اور مشق کرائی جا تی ہے ۔ درحقیقت یہ تربیت اپنی پوری زندگی اللہ کے حکم کے مطابق گزارنے کی تربیت ہے ۔ انہوں نے کہا کہ سورۃ بقرہ کو ترجمہ و تفسیر کے ساتھ پڑھیں جس میں اہل ایمان اور منافق کے فرق کے بارے میں بتایا گیا ۔ سورۃ بقرہ میں اجتماعی احکامات بھی ملیں گے ۔ ہم پر ایسے لوگ مسلط ہیں جو قصاص کے قانون اوراور آئین کی اسلامی دفعات کو ختم کر نے کی بات کرتے ہیں ۔ انہوں نے کہا کہ پاکستان کلمہ لا الہ الا اللہ کی بنیادپر قائم کیا گیا لیکن اجتماعی احکامات جو قرآن میں موجود ہیں اسے ختم کر نے کی بات کی جارہی ہے ۔