سیپکو انتظامیہ بندھانی برادری کے ساتھ سوتیلی ماں کا سلوک کب بند کریگی؟

43

سکھر( نمائندہ جسارت) بندھانی برادری کے صدر حاجی شریف بندھانی نے نواں گوٹھ میں ایکسپریس فیڈر نہ بنائے جانے کی شدید الفاظ میں مذمت کرتے ہوئے کہا ہے کہ سیپکو انتظامیہ بندھانی برادری کے ساتھ سوتیلی ماں کا سلوک کب بند کریگی؟ ہمارے مطالبے کے باوجود علاقے میں بجلی چوری کی روک تھام کو یقینی بنانے کے لیے اقدامات نہ کرکے آخر کس کے مفادات کو تحفظ فراہم کیا جارہا ہے، علاقے سے بجلی چوری کے خاتمے کو یقینی بنانے میں سیپکو کے بعض افسران و اہلکار خود رکاوٹ پیدا کررہے ہیں، اس لیے وہ چوری کو ختم کرانے کے لیے کوئی کردار ادا نہیں کررہے ہیں بلکہ علاقے میں غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ، بجلی کی آنکھ مچولی کرکے عوام کی تکلیف میں اضافہ کیا جارہا ہے، تھری فیز میں سے صرف ایک فیز کے ذریعے بجلی فراہم کی جارہی ہے، وولٹیج کی کمی وبیشی سے لاکھوں روپے مالیت کے برقی آلات بھی ناکارہ ہورہے ہیں۔ علاقہ مکینوں میں شدید غم و غصہ پھیل رہا ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے اپنے دفتر میں مختلف علاقوں سے آنیوالے وفود سے بات چیت کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پر حاجی مسلم، حاجی خضر حیات، حاجی یامین، عبدالجبار راجپوت، حافظ شعیب و دیگر بھی موجود تھے۔ حاجی شریف بندھانی کا کہنا تھا کہ سیپکو انتظامیہ کی جانب سے شہر کے مختلف علاقوں میں بجلی چوری کی روک تھام کو یقینی بنانے کے لیے ایکسپریس فیڈرز بنانے کا کام جاری ہے مگر افسوس کیساتھ کہنا پڑرہا ہے کہ ہمارے مطالبات کے باوجود سیپکو افسران و اہلکار نواں گوٹھ میں ایکسپریس فیڈر نہیں بنارہے ہیں، ہمارے علاقے کے لوگوں پر بجلی چوری کا الزام تو عائد کیا جاتا ہے مگر جب علاقہ مکینوں کی اکثریت خود بجلی چوروں کیخلاف کارروائی کا کہہ رہی ہے تو پھر سیپکو افسران و اہلکار کیوں ٹال مٹول سے کام لے رہے ہیں، آخر کیا وجہ ہے کہ نواں گوٹھ میں بجلی چوروں کیخلاف کارروائی نہیں کی جارہی ہے، کیوں ہمارے علاقے کو بجلی کی غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ، ڈیڈکشن سے پاک نہیں کیا جارہا۔ انہوں نے الزام عائد کیا کہ سیپکو کے بعض افسران و اہلکار خود بجلی چوری کرانے میں ملوث ہیں، اس لیے وہ ہمارے علاقے میں ایکسپریس فیڈر بنانے کے مخالف نہیں، وہ نہیں چاہتے کہ علاقے میں بجلی کی ترسیل کے نظام کو بہتر بنایا جائے، اس لیے وہ علاقہ مکینوں کو غیر اعلانیہ لوڈشیڈنگ، وولٹیج کی کمی و بیشی کے عذاب میں مبتلا کیے ہوئے ہیں۔ انہوں نے سیپکو چیف و دیگر اعلیٰ حکام سے اپیل کی کہ نوٹس لیکر نواں گوٹھ میں ایکسپریس فیڈربنانے کا کام شروع کیا جائے، علاقے کو بجلی چوری سے پاک کیا جائے، بجلی چوری کرانے میں ملوث سیپکو افسران و اہلکاروں کیخلاف بھی محکمہ جاتی کارروائی عمل میں لائی جائے بصورت دیگر احتجاج کا راستہ اختیار کرنے پر مجبور ہوجائیں گے۔