لاڑکانہ، پی پی کے میئر محمد اسلم شیخ نے عہدے سے استعفا دے دیا

49

لاڑکانہ (نمائندہ جسارت) پیپلز پارٹی کے میئر محمد اسلم شیخ نے پارٹی ممبران کے رویے سے دلبرداشتہ ہو کر اپنے عہدے سے استعفا دے دیا، شہر کی گندگی صاف کرواتے کرواتے خود ڈسٹ انفیکشن کا شکار ہوگئے، طبعیت ناساز ہونے کی بنا پر مزید کام نہیں کر سکتا، استعفے کا متن۔ پاکستان پیپلز پارٹی سے وابستہ یکم ستمبر 2016ء کو میئر لاڑکانہ کے عہدے کا چارج سنبھالنے والے شہر کے معروف بزنس مین محمد اسلم شیخ نے پونے تین سال اپنے فرائض سرانجام دینے کے بعد پارٹی کے منتخب ممبران چیئرمینز کی مخالفت سے دلبرداشتہ ہو کر استعفا دے دیا ہے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ میئر لاڑکانہ محمد اسلم کی جانب سے 22 اپریل کو بلائے گئے کونسل اجلاس میں پیپلز پارٹی کے چند ممبران نے اجلاس کا بائیکاٹ کرتے ہوئے شہر میں صفائی ستھرائی میں سنجیدگی نا ہونے سمیت دیگر الزامات عائد کیے تھے جس کے بعد سے میئر نے دلچسپی سے کام لینا بند کردیا تھا، جبکہ ذرائع بتاتے ہیں کہ رکن سندھ اسمبلی فریال تالپور کی جانب سے بھی میئر سے استعفی کا کہا گیا تھا۔ پیپلز پارٹی کا گڑھ لاڑکانہ گندگی اور سیوریج کے ناکارہ نظام کے باعث آئے روز خبروں کی زینت بنتا رہتا ہے، شہر میں جا بجا گندگی مٹی دھول بدبو کے باعث کئی امراض جنم لیتے ہیں، اس سنگین صورتحال سے جہاں کئی شہری بچے سانس اور پیٹ کی بیماریوں میں مبتلا ہیں، وہیں صفائی ستھرائی کے ذمے دار ادارے میونسپل کارپوریشن کے میئر لاڑکانہ محمد اسلم نے بھی اعتراف کیا ہے کہ وہ ڈسٹ الرجی کے باعث شدید بیمار ہیں، یہاں تک کہ اگر کچھ وقت اور مٹی اور دھول میں کام کیا تو انفیکشن بڑھ سکتا ہے۔ اس ساری صورتحال سے واضح ہے کہ شہر میں اگر ہنگامی بنیادوں پر صفائی کا عمل نا کیا گیا تو مزید تباہی مچ سکتی ہے۔