بھٹ شاہ ،طویل اور غیر اعلانیہ گیس کی لوڈشیڈنگ جاری،شہری بدحال ،پانی کی قلت

20

بھٹ شاہ (نمائندہ جسارت) بھٹ شاہ میں 12گھنٹے کی غیر اعلانیہ گیس کی لوڈشیڈنگ نے روزہ داروں کا جینا دوبھر کردیا، سحری و افطاری کے اوقات میں شہریوں کو کھانا پکانے کے لیے گیس فراہم نہیں کی جارہی جس سے سحری اور افطاری میں شدید دشواری کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے، شہریوں کا حکام سے نوٹس لینے کا مطالبہ۔ بھٹ شاہ میں سوئی سدرن گیس کی جانب سے 12 گھنٹے سے زائد لوڈشیڈنگ کی جارہی ہے، زونل منیجر ہالا جبکہ سب ڈویژنل بھٹ شاہ کی نااہلی اور کرپشن کے سبب بھٹ شاہ کے شہری و روزہ داروں کو افطاری اور سحری کے اوقات میں بھی گیس فراہم نہیں کی جارہی ہے، جس کے سبب اس ماہ صیام میں بھی شہریوں اور روزہ دارروں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے لیکن ان کا تدارک کرنے والا کوئی نہیں ہے۔ دوسری جانب معلوم ہوا ہے کہ گیس کے مذکورہ بالا افسران نے جان بوجھ کر سیکڑوں چوری کے کنکشن چلوائے ہوئے ہیں جبکہ 200 سے زائد غیر قانونی طور پر جرنیٹر بھی چل رہے ہیں اور ان سے ہر ماہ ہزاروں روپے بٹورے جارہے ہیں اور اس بات کی اذیت غریب صارفین اور شہریوں کو دی جارہی ہے جبکہ شہر کے مختلف مقامات پر جن میں بگھیہ محلہ، شیخ محلہ، لطیف کالونی، ہنر مند کالونی سمیت دیگر مقامات پر گیس کے لیے لگے ہوئے سیکڑوں میٹروں سے گیس کا اخراج بھی جاری ہے لیکن اس گیس کی لیکج کو روکنے کے لیے کوئی بھی انتظام نہیں کیا گیا ہے، جس سے کسی بھی وقت کوئی بھی حادثہ رونما ہوسکتا ہے جبکہ ان میٹروں سے ضائع ہونے والی گیس کی لیکیج کو بیلنس کرنے کے لیے چودگی موڑ کے مقام پر لگے ہوئے مین وال کو بند کردیا جاتا ہے، جس کی وجہ سے پورے شہر کو گیس کی فراہمی معطل ہوجاتی ہے جبکہ اسی مین وال سے افطاری کے لیے دوپہر 3 بجے سے رات 9 بجے تک جبکہ سحری کے لیے رات 3 بجے سے 9 بجے تک گیس فراہم کی جارہی جبکہ مذکورہ 12 گھنٹے دیے جانے والے اوقات میں بھی گیس کا پریشر کم رہتا ہے اور اس عمل کی وجہ سے گلی اور محلوں میں گیس کی فراہمی نہیں ہوپاتی جس کی وجہ سے گھریلو خواتین کو کھانا پکانے اور سحری اور افطاری میں بھی شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا ہے۔ افسران کی نااہلی اور کرپشن کی وجہ سے شہریوں اور روزہ داروں کو ماہ صیام میں بھی سکھ کا سانس لینا محال ہوگیا ہے لیکن حکام اس بات کا تدارک کرنے والے نہیں۔ شہر کی سیاسی، سماجی اور مذہبی حلقوں نے وزیر اعظم پاکستان عمران خان، وفاقی وزیر گیس و پیٹرولیم، جنرل منیجر سوئی سدرن گیس سے مطالبہ کیا ہے کہ کرپٹ اور نا اہل افسران کیخلاف سخت سے سخت کارروائی عمل میں لائیں۔