آئندہ بجٹ میں11 نئے کالج بنانے کافیصلہ

15

کراچی(اسٹاف ر پورٹر)وزیر تعلیم سندھ سید سردار علی شاہ کی صدارت میں محکمہ کالج ایجوکیشن کا اعلیٰ سطحی اجلاس انکے دفتر میں منعقد کیا گیا. جس میں سیکرٹری کالجز پرویز سیہڑ, آر ایس یو چیف پروگرام مینیجر آصف اکرام, تمام ریجنل ڈائریکٹرز اور دیگر متعلقہ افسران نے شرکت کی۔جلاس سے خطاب کرتے ہوئے وزیر تعلیم سید سردار علی شاہ نے سیکرٹری کالجز پرویز سیہڑ کو ہدایت دی کہ نئے مالی سال کے بجٹ میں مختلف تعلقوں میں کالجز فراہم کرنے کی اسکیمیں شامل کریں. انہوں نے کہا کہ ہماری کوشش ہے کہ سندھ کے ہر تعلقہ میں کم از کم ایک بوائز اور ایک گرلز کالج ضرور ہو. ۔سردار شاہ نے سیکرٹری کالجز کو واضح ہدایات دی کہ جہاں پر کالجز موجود نہیں تو ہائر سیکنڈری اسکول کو کالج کا درجہ دیکر سائنسی لیبارٹریز سمیت تمام ضروری سہولیات فراہم کرنے کی اسکیم بھی شامل کرلیں. انہوں نے مزید کہا کہ اگر جہاں پر ڈگری کالج اور ہائر سیکنڈری اسکول ایک ساتھ ہیں تو وہاں ہائیر سیکنڈری کو کالج میں شامل کرکے اسکو مزید اپگریڈ کیا جائے. اجلاس کے دوراں تمام ریجنل ڈائریکٹرز سے موجودہ اور نئے کالجز کے لیے تجاویز مانگی گئیں اور یہ فیصلہ کیا گیا کہ ضرورت کی بنیاد آئندہ بجیٹ میں گیارہ نئے کالجز بنائے جائیں گے۔ وزیر تعلیم سردار شاہ نے خصوصی طور پر اس بات زور دیا کہ ہائیر سیکنڈری سے کالجز میں اپگریڈ ہونے والے یا نئے کالجز کی تعمیر کے وقت اس بات کا خاص خیال رکھیں ان میں سائنسی لیبس ضرور ہونی چاہییں۔اجلاس کو بریفنگ دیتے ہوئے سیکرٹری کالجز پرویز سیہڑ نے بتایا کہ کراچی کی ہجرت کالونی سمیت دیگر کالجز کی بلڈنگز تیار ہوچکی ہیں اور یکم جولائی سے وہاں کلاسز شروع کی جائیں گی۔