قمری کیلنڈر کا فیصلہ علما کی مشاورت سے ہوگا‘ نور الحق قادری

84

پشاور (آئی این پی ) وفاقی وزیر برائے بین المذاہب ہم آہنگی نور الحق قادری نے کہا ہے کہ رویت ہلال کا مسئلہ حل ہوسکتا ہے تو اس پر40 لاکھ کی جگہ 40 کروڑ روپے لگانا کوئی بڑی بات نہیں، قمری کلینڈر کے حوالے سے فیصلہ علما کرام کی مشاورت سے ہوگا۔ان خیالات کااظہار انہوں نے بین المذاہب ہم آہنگی کانفرنس سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔وفاقی وزیرنے کہا کہ جب فضول کاموں پر پیسے خرچ ہوجاتے ہیں تو رویت ہلال پر لگانے میں کیا حرج ہے؟۔اسی طرح اجلاس کے40 لاکھ بھی کوئی مسئلہ نہیں ہے، رویت ہلال کمیٹی ختم کرناہے تواس پرتمام علماسے مشاورت کرنا ہوگی، جب تک رویت ہلال کمیٹی کوختم نہیں کیاجاتایہ کام کرتی رہے گی۔ان کا کہنا تھا کہ رویت ہلال کمیٹی کوچلاناہے یاقمری کلینڈر سے معاملات طے کرنا ہیں یہ فیصلہ علماکرام کی مشاورت سے ہوگا۔یاد رہے کہ وزیر برائے سائنس اینڈ ٹیکنالوجی نے گزشتہ دنوں رویت ہلال پر تنقید کے نشتر برساتے ہوئے کہا تھا کہ ایک اجلاس کے لیے40 لاکھ روپے خرچ ہوتے ہیں، اس سے بہتر ہے آئندہ10 سے15 برس تک کا قمری کلینڈر ماہرین کے مشورے سے تشکیل دے دیا جائے۔ فواد چودھری نے7 مئی کو آگاہ کیا تھا کہ حکومت نے عیدین، رمضان اور دیگر قمری مہینوں کا چاند دیکھنے کے لیے اہم فیصلہ کرلیا، اب رویت ہلال کے لیے وزارت سائنس اینڈ ٹیکنالوجی کی کمیٹی تشکیل دے دی گئی ہے اور اس کا نوٹیفکیشن بھی جاری کردیا گیا۔ کمیٹی آئندہ5 سال کے لیے قمری مہینوں کی درست تاریخیں طے کریگی، جوائنٹ سائنٹیفک ایڈوائزر طارق مسعود کو کمیٹی کا سربراہ مقرر کردیا گیا ہے جبکہ محکمہ موسمیات کے ڈپٹی ڈائریکٹر ندیم فیصل، ابو نسان اور وقار احمد اورسپارکو سے غلام مرتضیٰ بھی کمیٹی میںشامل ہیں۔کمیٹی آئندہ 5 سال کے لیے عیدین ، محرم اور رمضان سمیت دیگر چاند کی تاریخوں کا 100فیصد حقیقی تعین کرے گی اور اہم کیلنڈر جاری کرے گی، اقدام سے ہر سال رویت ہلال پرپیدا ہونے والا تنازع ختم ہوگا۔