مشرف، پی پی اور ن لیگ کے لوگوں کو قوم پر مسلط کردیا گیا، عبدالعزیز غوری

41

ٹنڈوآدم (نمائندہ جسارت) جو پارٹی الفاظ کا جادو چلا کر بغیر کسی محنت اور تیاری کے میدان میں اترتی ہے وہ ذلت آمیز شکست سے دوچار ہوکر رہتی ہے اب تک جو پارٹی بھی برسراقتدار آئی ہے اس نے اپنے منشور سے انحراف کیا عوام کو دھوکا دیا عیاشی کی خزانے کولوٹا عوام پر قرضوں کا ناقابل تلافی بوجھ ڈالا ہے ہر آنے والی پارٹی نے نظریہ پاکستان سے بیوفائی اور پاکستان کے شہیدوں سے غداری کی ہے۔ ان خیالات کا اظہار جماعت اسلامی کے رہنما عبدالعزیز غوری ایڈووکیٹ نے علامہ اقبال کی برسی کے موقع پر مختلف سیاسی پارٹیوں کے لوگوں سے گفتگو کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے کہاں کہ 70 سال سے کشمیر کا مسئلہ حال نہیں ہوسکا، دریاؤں کا پانی بیچ دیا، 1960ء کے بعد سے کوئی ڈیم نہیں بناسکے۔ پہلے روٹی، کپڑا اور مکان سے محروم تھے اب پانی جیسی زندگی بخش نعمت سے بھی محروم ہورہے ہیں۔ موجودہ حکمرانوں کو جس طرح لایا گیا، سابقہ حکمرانوں کو چور ڈاکو اور کرپٹ کہہ کر نکالا گیا، امید بندھی تھی کہ آنے والے سابقین سے بہتر ہوں گے مگر عوام نے پھر دھوکا کھایا، کاش حکمران رنجش بھلا کر ملک کی فلاح وبہبود کے لیے اتحاد کی فضا پیدا کرتے مگر انا کو قربان کرنے کے بجائے اپنے وقار کو داؤپر لگادیا، چوروں، ڈاکووں اور ڈکٹیٹروں کی ٹیم کے لوگوں کو وزارتیں سونپ دی گئیں۔ مشرف، پی پی اور ن لیگ کے لوگوں کو قوم کے سروں پر مسلط کردیا گیا، ملک کے خیر خواہ تماشہ دیکھنے کے بجائے آگے آئیں اور حکمرانوں کے اچھے کاموں میں تعاون کریں اور غلطیوں سے روکنے کی کوشیش کریں۔ انہوں نے کہاں کہ حکمران اپنی خفت چھپانے کے لیے کتراتے رہتے ہیں، وقت کا تقاضا ہے کہ لڑائی اور مخالفت کی فضا کو ختم کیا جائے اور ریاست کو ناکام ہونے سے بچایا جائے۔