وزیراعظم کے دورہ ایران سے قبل دہشت گردی معنی خیزہے، لیاقت بلوچ

92

لاہور( نمائندہ جسارت) جماعت اسلامی پاکستان اور ملی یکجہتی کونسل کے سیکرٹری جنرل لیاقت بلوچ نے کامونکی میں میڈیا سے گفتگو کرتے ہوئے کوئٹہ دہشتگردی کے المناک اور وحشت ناک واقعہ کی مذمت کی ہے اور کہاہے کہ وہ 14 اپریل کو شہدا کی تعزیت کے لیے کوئٹہ جائیں گے اور 15 اپریل کو کوئٹہ میں ملی یکجہتی کونسل کا صوبائی اجلاس ہوگا ۔انہوں نے کہاکہ دہشتگردی کے خوفناک واقعات کے ہمہ گیر منفی اثرات ہوتے ہیں ۔ وزیراعظم عمران خان کے دورہ ایران سے پہلے کوئٹہ میں دہشتگردی معنی خیز ہے ۔ حالات کو خراب رکھنا اور پاکستان کو غیر مستحکم کرنا دشمن کا ہدف ہے ۔ بھارتی دہشتگردی کا نیٹ ورک فعال ہے ۔ قومی ایکشن پلان پر عملدرآمد کی سمت اور ٹارگٹ درست کیے جائیں ۔ دہشتگردی ، انتہا پسندی اور بیرونی نیٹ ورک کو جڑ سے اکھاڑ نا قومی سلامتی کے لیے ناگزیر ہے ۔ لیاقت بلوچ نے کہاکہ ملک کے اقتصادی حالات بہت ہی ابتر ہیں ۔ غربت اور مہنگائی عوام کے لیے روگ بن گیاہے ۔ آئی ایم ایف کی شرائط مرحلہ وار پور ی کی جارہی ہیں ، جس سے ڈالر کی قیمت بڑھتی جارہی ہے ۔ اسٹاک ایکسچینج بیٹھ جاتا ہے ، اربوں روپے ڈوب رہے ہیں ۔ آئی ایم ایف معاہدہ پر عمل سے اقتصادی حالات اور ابتر ہوں گے ۔ عمران خان حکومت کی اقتصادی ٹیم بری طرح ناکام ہے ۔ عوام میں مسلسل نفرت بڑھ رہی ہے ۔دریں اثنا لیاقت بلوچ نے ٹیلی فون پر جمعیت علمائے اسلام کے سربراہ مولانا فضل الرحمن کی صحت کی صورتحال دریافت کی ۔ مولانا اب بہت بہتر اور معمول کی سرگرمیوں میں مصروف ہیں ۔اللہ تعالیٰ انہیں صحت کاملہ و عاجلہ عطا کرے ۔