سندھ اسمبلی میں خواتین کے تحفظ کا بل پاس کیا، شہلا رضا 

55

بدین، گولارچی (نمائندگان جسارت) خواتین کی فلاح و بہبود کی صوبائی وزیر شہلا رضا نے کہا ہے کہ سندھ رورل سپورٹ پروگرام کے زیر اہتمام بدین ضلع کی غریب خواتین کو 1700 مکانات تعمیر کروا کردیے جائیں گے جن میں تین سو سے زائد مکانات کی تعمیر مکمل ہوچکی ہے۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے گولارچی کے قریب گاؤں ابراہیم چانڈیو میں نئے تعمیر ہونے والے مکانات خواتین میں تقسیم کرنے کی تقریب سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔ انہوں نے تعمیر ہونے والے نئے مکانات میں سے تین سو مکانات کی تعمیرات کا کام مکمل ہوچکا ہے جبکہ باقی مکانات کی تعمیر کا کام جلد مکمل کرلیا جائے گا۔ بے نظیر کا خواب تھا کہ خواتین کو اپنے جائز حقوق حاصل ہوں۔ انہوں نے آخری دم تک خواتین کے حقوق کی جدوجہد کو جاری رکھا، اب محترمہ کے مشن کو بلاول زرداری آگے بڑھا رہا ہے۔ انہوں نے مزید کہا کہ سندھ اسمبلی میں خواتین کے تحفظ کا بل پاس کیا گیا ہے ہمیں اپنی بچیوں کو اعلیٰ تعلیم کے مواقع فراہم کریں تاکہ معاشرے میں مرد و خواتین ملکر کام کرسکیں۔ انہوں نے مزید کہا کہ بچیوں کی کم عمری میں شادی کروانا بھی ایک جرم ہے، ان کو فوری روکا جائے اور قانون کی خلاف ورزی کرنے والے والدین کیخلاف مقدمہ درج کیا جائے۔ 18سال کی عمر میں بچیوں کی شادی کی جائے تاکہ وہ اپنے گھر منظم طریقے سے چلانے کے قابل ہوسکیں اور ایک حقیقی زندگی بسر کرسکیں۔ اس موقع پر ایم اپی اے تنزیلا قنبرانی، ڈی سی بدین ڈاکٹر حفیظ احمد سیال و دیگر نے تقریب سے خطاب کیا۔