پی ایس ایل سے پرانا کراچی مل گیا،جلد پرانا پاکستان بھی مل جائیگا،مراد علی شاہ

185

کراچی (اسٹاف رپورٹر) وزیراعلیٰ سندھ سید مراد علی شاہ نے کہا ہے کہ کراچی میں کامیاب پی ایس ایل سے پرانا کراچی مل گیا ہے، ان شاء اللہ جلد پرانا پاکستان بھی مل جائے گا جس میں لوگ پیار محبت اور امن و سکون کے ساتھ رہتے تھے، نئے پاکستان میں پہلی مرتبہ ایسی حکومت دیکھی ہے جو لوگوں سے کہہ رہی ہے کہ ان کی چیخیں نکل جائیں گی، اگر انہیں کسی وجہ سے حکومت مل بھی گئی ہے تو عوام کے مسائل کے حل پر توجہ دی جائے انہیں خوفزدہ نہ کیا جائے۔ سندھ حکومت کو صرف آئینی طریقے سے ہٹایا جاسکتا ہے اور دوسرا کوئی طریقہ نہیں ہے، جو لوگ دوسرے طریقوں کی بات کر رہے ہیں انہیں یاد رکھنا چاہیے کہ انہوں نے بھی آئین کے تحت حلف اٹھا رکھا ہے جس کی پاسداری کرنا ان کا فرض ہے۔ انہوں نے یہ بات پیر کی شام سندھ اسمبلی بلڈنگ کے کمیٹی روم میں پریس کانفرنس اور بعد ازاں صحافیوں کے سوالات کا جواب دیتے ہوئے کہی۔ وزیر اعلیٰ سید مراد علی شاہ نے کہا کہ نیوزی لینڈ میں پیش آنے والے واقعے کی مذمت کرتے ہیں۔ کراچی میں 3 شہداء کے لواحقین سے ملاقات اور تعزیت کی ہے اس واقعے سے ہمیں یہ سبق ملتا ہے کہ دہشتگردی کا کوئی مذہب نہیں ہوتا ہم سب دہشتگردی کا شکار رہے۔ ہمارے چیئرمین بلاول زرداری نے یہ بات کہی ہے کہ ہمیں اپنے درمیان موجود دہشت گردوں کی نشاندہی کرکے ان کا خاتمہ کرنا ہوگا اور ایسا نیشنل ایکشن پلان پر عملدرآمد کے بعد ہی ممکن ہوسکتا ہے۔ وزیراعلیٰ سندھ نے مزید کہا کہ ہمیں نیشنل ایکشن پلان پراس کی اصل روح کے مطابق عملدرآمد کرنے کی ضرورت ہے سندھ میں ہم نے اس پر بھرپور طریقے سے عملدرآمد کرنے کی کوشش کی ہے۔ پچھلے دنوں کراچی میں پیش آنے والے دہشت گردی اور ٹارگٹ کلنگ کے واقعات کا سدباب کیا ہے۔ دہشت گردوں کا نیٹ ورک پکڑا گیا ہے جس کا تعلق ایم کیو ایم لندن سے ہے، ہم نے نیوزی لینڈ میں دہشت گردی کا شکار ہونے والے پاکستانیوں کو ہر ممکن مدد کی یقین دہانی کرائی ہے۔ وزیراعلی سندھ نے کہا کہ کراچی میں پی ایس ایل کے کامیاب انعقاد پر سب مبارکباد کے مستحق ہیں۔ کچھ لوگ اسے ناکام بنانا چاہتے تھے تاہم خدا کا شکر ہے کہ بدخواہ خود ناکام ہوئے ہیں۔ اصل کامیابی اتحاد، امن اور سب سے بڑھ کر پاکستان کی ہے۔ کراچی کے عوام کا جو بھرپور تعاون حاصل رہا وہ مثالی تھا۔ کراچی کے لوگوں کے شکر گزار ہیں کہ انہوں نے پی ایس ایل کی کامیابی میں بڑا کردار ادا کیا۔ تمام انتظامیہ، پی سی بی، قانون نافذکرنے والے ادارے، پاک فوج، پولیس، رینجرز، کے ایم سی، ڈی ایم سیز، محکمہ بلدیات نے ملکر ایک ایسا ایونٹ منعقد کیا جس کی مثال نہیں ملتی۔ انہوں نے مزید کہا کہ گزشتہ 6 ماہ کے دوران سندھ حکومت کو اس کے حصے کی رقم سے 120 ارب روپے کم ملے ہیں جس کی وجہ سے سخت مالی مسائل کا سامنا ہے۔ سندھ حکومت اپنے ملازمین کی تنخواہیں نہیں روک سکتی مجبوراً ترقیاتی کاموں کے لیے مختص فنڈز میں کٹوتی کرنا پڑی جس سے ترقیاتی سرگرمیاں متاثر ہورہی ہیں۔