صارفین کے حقوق کیلئے عدالتوں کو فعال کیا جارہا ہے، مشیر قانون سندھ

177

کراچی(اسٹا ف رپورٹر) سندھ حکومت بہت جلد صارفین کے حقوق کے تحفظ کیلئے صارفین کی عدالتوں کو فعال کرنے کا فیصلہ کیا ہے اس سلسلے میں تمام قانونی پیچیدگیوں کو بھی دور کیا جائے گا اور سندھ کنزیمر پروٹیکشن ایکٹ 2014پر بھر پور طریقے سے عمدرآمد کیا جائے گا،

ان خیا لا ت کا اظہا ر حکومت سندھ کے مشیر اطلاعات اور قانون بیرسٹر مرتضی وہاب نے گذشتہ روز ہیلپ لائن ٹرسٹ اور نیشنل فورم فار انوائرنمنٹ اینڈ ہیلتھ کے تحت ورلڈ کنزیمر رائٹس ڈے کی مناسبت سے منعقدہ صارفین کی عدالت کی اہمیت پر منعقدہ سیمنیا ر سے خطاب کرتے ہوئے کیا۔

اس موقع پر سابق وفاقی وزیر اطلاعات جاوید جبار، بانی ہیلپ لائن ٹرسٹ عبدالحمید میکر، منیر قریشی، عرفان احمد، اعظم شکیل اور عافیہ سلام نے بھی خطاب کیا۔

مشیر قانون نے کہا کہ میں ذاتی طور پر صارفین کے حقوق کے حوالے سے ہر ممکن طور پر مدد کرنے کو تیار ہوں اور جہاں بھی قانون سازی کی ضرورت ہوگی میں مدد کرنے کو تیار ہوں ۔انہوں نے کہا کہ حکومت ضلع سطح پر 29عدالتوں کا قیام عمل میں لایا جا چکا ہے جس میں مجسڑیٹ اور عدالتی عملے کا بھی تقرر جلد کیا جائے گا۔

انہوں نے کہا کہ یہ عدالتیں مکمل طور پر صارفین کی شکایات کا ازالے کیلئے بھر پور کام کریں گی۔انہوں نے کہا کہ ان عدالتوں میں انسانی حقوق کے لحاظ سے ترجیح دی جائے گی جس میں سرفہرست غذائی اشیاء اور انسانی صحت کے معاملات کو دیکھا جائے گا۔

جاوید جبار نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ صارفین کو بھی ایک ذمہ دار صارف ہونے کا ثبوت دینا چائے اور کھانے پینے اور دیگر اشیاء کی خرید و فروخت کے دوران دوسرے صارفین کے حقوق کا بھی خیال رکھنا چائیے کہ ان کے ساتھ کوئی نا انصافی نہ ہو۔

انہوں نے کہا عدالتوں کے قیام کے ساتھ ساتھ حکومت لوگوں کو ان کے حقوق کے بارے میں آگاہی بھی فراہم کرے تاکہ انہیں اپنے حقوق کا علم ہوسکے۔ انہوں نے کاہ کہ حکومت صارفین کے حقوق کیلئے قوانین پر سختی سے عمل کرے۔

جسٹس ر ماجدہ رضوی نے اپنے ییغام میں کہا کہ ہیلپ لائن ٹرسٹ تربیتی پروگرامز اور آگاہی کے فروغ کیلئے بھرپور تعاون کریگی۔اس موقع پر حمید میکر نے کہاکہ ہیلپ لائن ٹرسٹ گذشتہ 10سال سے صارفین کی عدالتوں کے قیام کیلئے سرگرم ہے اور اب عدالتوں کے قیام کے بعد بھرپو ر توقع ہے کہ صارفین شکایات میں کمی آئے گی۔