قتل کا ملزم سپریم کورٹ سے فرار ہوگیا

168

کراچی: سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں قتل کا ملزم عبوری ضمانت مسترد ہونے پر فرار ہوگیا۔

تفصیلات کے مطابق چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ نے سپریم کورٹ کراچی رجسٹری میں قتل کیس کی سماعت کرتے ہوئےسات سال سے عبوری ضمانت پر رہنے والے ملزم کی ضمانت مسترد کر دی گئی۔

سماعت کے دوران ملزم کے وکیل نے عدالت میں دلائل دیتے ہوئے کہا کہ میرے موکل کا مقتول سے زمین کے تنازع پر جھگڑا ہوا تھا۔

ایڈیشنل پراسیکیوٹر جنرل نے عدالت کو بتایا کہ ملزم نے 2012 میں ایک شخص کو قتل کردیا تھااور ملزم کے خلاف تھانہ حیدر آباد میں مقدمہ درج ہے۔

چیف جسٹس آصف سعید کھوسہ نےریمارکس دیے کہ قتل کیس میں ملزم کو اتنا عرصہ عبوری ضمانت پر رکھنے کا کوئی جواز نہیں۔ سندھ ہائیکورٹ میں 2012 میں ضمانت کی درخواست دائر ہوئی۔ جس کا فیصلہ 2017 میں ہوا۔ سندھ ہائیکورٹ نے عبوری ضمانت پر 5 سال بعد فیصلہ جاری کیا۔

چیف جسٹس نے مزید کہا کہ ملزم کاسات سال تک عبوری ضمانت پر رہنا میرے لیے دھچکا ہے۔اتنے لمبے عرصے تک عبوری ضمانت پر رہنے کا کوئی جواز دے سکتا ہے؟

بعد ازاں سپریم کورٹ نے ملزم کی عبوری ضمانت مسترد کردیا جس پر ملزم فرار ہوگیا۔