سی آر پی سی اور میڈیونکس کے تحت ایوارڈز کے ساتھ14 مارچ کو عالمی یوم صارف سیمینار بھی منعقد ہو گا،

145

کراچی ( اسٹا ف رپورٹر) قومی انڈسٹری کی معاونت اور اسے فروغ دینے کے لیے صارفین کے عالمی دن کے موقع پر مختلف مصنوعات اور ان کے مخلص صارفین کوپاکستان کے پہلے کنزیومر لائلٹی ایوارڈز سے نوازا جائے گا۔ اس سلسلے میں ایک تقریب کنزیومرپروٹیکشن کونسل آف پاکستان (سی آر پی سی ) اور میڈیونکس کے تحت 14 مارچ کو مقامی ہوٹل میں منعقد ہو گی۔ 

یہ اعلان چیئرمین سی آر پی سی شکیل احمد بیگ نے گزشتہ روز کراچی پریس کلب میں منعقدہ پریس کانفرنس کے دوران اظہارخیال کرتے ہوئے کیا۔ اس موقع پرصدر پیک پرائیویٹ اسکولز ایسوسی ایشن سندھ سید شہزاد اختر، جامعہ کراچی کے سوشل ڈپارٹمنٹ کے چیئرمین ڈاکٹرمحمد شاہد، میڈیا کنسلٹنٹ و سی ای او میڈیونکس اختر شاہین رند، سی آر پی سی کے وائس چیئرمین عمران خالق، ڈائریکٹرز سی آر پی سی منظور حسین، علی بخاری، صوفیہ خان، فرحت عثمان، فوکل پرسن سی آر پی سی سید محمد دانش اور دیگر بھی موجود تھے۔

شکیل احمد بیگ نے بتایا کہ صارفین کے حوالے سے سال بھر مختلف پروگرامز اور ایونٹس منعقد ہوتے رہتے ہیں لیکن یہ پہلا موقع ہے کہ صارفین کو براہ راست ایوارڈز پیش کر کے ان کی مقامی مصنوعات سے مخلصی کا اعتراف کیا جائے گا۔ یورپ اور امریکہ میں بھی یہ عام ہے کہ صارف کو براہ راست ایوارڈ دیا جاتا ہے کیونکہ صارف کی وجہ سے ہی ہر انڈسٹری کا پہیہ چلتا ہے اور پاکستان میں اسی کو زیادہ ترکمپنیاں نظر انداز کر جاتی ہیں۔

مہذب معاشروں میں صارفین کو سب سے زیادہ اہمیت و عزت دی جاتی ہے اوروہاں ہمیشہ صارف کی بات کو درست مانا جاتا ہے جسے انگریزی میں کہا جاتا ہے، Customer is always rigt۔ انہوں نے بتایا کہ صارف کا عالمی دن دنیا بھر میں 15 مارچ کو ہر سال منایا جاتا ہے۔ سی آرپی سی نے بھی ہر سال کی طرح اس دن کو امسال بھی منانے کا فیصلہ کیا ہے۔سی آر پی سی اور میڈیونکس کے تحت 14 مارچ کو عالمی یوم صارف پر سیمینار اور پاکستان کا پہلا کنزیومر لائلٹی ایوارڈ منعقد کیا جائے گا۔

سیمینار کے انعقاد میں اچھی ساکھ کے حامل پاکستانی مصنوعات بنانے والے اداروں، پاکستان اسٹینڈرڈز اینڈ کوالٹی کنٹرول اتھارٹی ( پی ایس کیو سی اے)، کمشنر کراچی آفس اور سندھ فوڈ اتھارٹی کا تعاون بھی شامل ہے۔ تقریب کے مہمان خصوصی وزیر بلدیات سندھ سعید غنی ہوں گے۔

سپریم کورٹ کے سابق سینئر جج جسٹس ریٹائرڈ وجیہہ الدین احمد صدارت کریں گے۔وزیراعلیٰ سندھ کے مشیران راشد ربانی اور وقار مہدی بھی اعزازی مہمانان ہوں گے۔ شکیل بیگ نے کہا کہ پاکستان کو زرمبادلہ کے مسائل کا سامنا ہے۔ مقامی صنعت کو پروموٹ اور سپورٹ کرنا بہت ضروری ہے۔ سی پیک پر بھی کام جاری ہے۔ اس تناظرمیں مقامی صنعت کا فروغ پہلے سے زیادہ اہم ہے تاکہ وہ دیگر ملٹی نیشنل اور غیر ملکی کمپنیوں کا مقابلہ کر سکے۔

شکیل بیگ نے بتایا کہ کنزیومر لائلٹی ایوارڈزبہت محدودپیمانے پر مصنوعات اور ان کے مخلص صارفین کو پیش کیے جائیں گے۔ اس ایونٹ کے دوران انسانیت کی فلاح و بہبود اور ضرورت مندوں کی مدد کرنے والے افراد کو بھی پاکستان کے پہلے پرائیڈ آف ہیومینٹی ایوارڈز پیش کیے جائیں گے۔ ایسے افراد کی وجہ سے پاکستان صدقہ، خیرات کرنے والے ممالک کی فہرست میں سب سے آگے ہے۔ 

یہی وہ افراد ہیں جن کی وجہ سے لاکھوں، کروڑوں خاندانوں کی ضروریات پوری ہوتی ہیں جن میں اکثریت سفید پوش افراد کی ہوتی ہے۔ اگرچہ ایسے لوگ صرف اللہ کی رضا کے لیے کام کرتے ہیں لیکن سی آرپی سی اورمیڈیونکس ان کی ان فلاحی خدمات کو بے انتہا قدر کی نگاہ سے دیکھتے ہیں۔

پریس کانفرنس کے اختتام پرسینئر صحافیوں کی زیرنگرانی سی آر پی سی کو موصول ہونے والے ڈیٹا کی بنیاد پرمخلص صارفین کے ناموں کی قرعہ اندازی بھی کی گئی۔