اسرائیل صرف یہودیوں کا ملک ہے ،نیتن یاہو

299

بین الاقوامی خبر رساں ادارے کے مطابق انسٹا گرام پر اسرائیلی وزیراعظم نیتن یاہو نے ایک بار پھر اپنی متعصبانہ سوچ کی عکاسی کرتے ہوئے کہا کہ اسرائیل ہر کسی کا ملک نہیں  بلکہ یہ صرف یہودیوں کی سرزمین ہے۔

وزیراعظم نیتن یاہو جنہیں کرپشن الزامات میں نااہلی کا سامنا بھی ہوسکتا ہے وہ اپنی گرتی ہوئی ساکھ کو بچانے کے لیے مذہبی کارڈ کھیلتے ہوئے عرب فلسطینیوں کے بغض میں اسرائیل کو یہودیوں کی سرزمین قرار دے گئے۔

گزشتہ برس اسرائیلی  وزیراعظم نے ایک قرار داد بھی منظور کرائی تھی جس کے تحت اسرائیل کو صرف یہودیوں کا ملک قرار دیا گیا تھا تاکہ فلسطینیوں کو بنیادی حقوق سے محروم رکھا جا سکے۔

اس قراد داد کی منظوری سے عربی کا سرکاری زبان کا درجہ ختم کردیا گیا تھا اور اسے ثانوی زبانوں کی طرح خصوصی زبان کی حیثیت دے دی گئی تھی جب کہ عبرانی کی حیثیت میں اضافہ کردیا گیا تھا۔

اسرائیلی وزیراعظم کی یہ متعصبانہ کاوشیں ووٹرز کی ہمدری حاصل کرنے کے لیے ہیں، اسرائیل میں رواں برس اپریل میں عام انتخابات ہونے جا رہے ہیں اور کرپٹ زدہ نیتن یاہو کو اپنی ناکامی یقینی نظر آرہی ہے۔