حیدرآباد ،ایک ہی خاندان کے 7 افراد کی نعشیں گھر سے برآمد

137
حیدرآباد، امدادی ٹیمیں گھر سے برآمد ہونے والی لاشوں کو اسپتال منتقل کر رہی ہیں
حیدرآباد، امدادی ٹیمیں گھر سے برآمد ہونے والی لاشوں کو اسپتال منتقل کر رہی ہیں

حیدرآباد/ٹنڈوجام(نمائندہ جسارت+ خبر ایجنسیاں) ٹنڈوجام کے گوٹھ حق نوازجونیجو میں واقع گھر سے7افراد کی نعشیں برآمد ہوئی ہیں، جاں بحق افراد میں 5بچے، ایک مرد اور خاتون شامل ہیں۔پولیس کے مطابق تمام افراد کی نعشیں دو دن پرانی لگتی ہیں، تاہم حتمی فیصلہ پوسٹ مارٹم رپورٹ آنے پر کیا جائے گا،وزیراعلیٰ سندھ نے و اقعہ کا نوٹس لیتے ہوئے کمشنر حیدرآباد اور ڈی آئی جی سے تفصیلی رپورٹ طلب کرلی ۔ تفصیلات کے مطابق راہو کی تھانے کی حدود میں واقع حق نواز جونیجو گوٹھ میں ایک گھرسے 7افراد کی نعشیں برآمد ہوئیں۔نعشیں اسکول ٹیچر اشرف حیات، ان کی اہلیہ، ایک بیٹا اور 4بیٹیوں کی ہیں جو 2روز پرانی ہیں۔ علاقہ مکینوں نے نعشیں دیکھ کر پولیس کو اطلاع دی۔ پولیس حکام کے مطابق نعشیں 2 دن پرانی ہیں اور میتوں کو سول اسپتال منتقل کردیا گیا ہے۔ مرنے والے تمام افراد کے جسم پر گولیوں اور تشدد کا کوئی نشان موجود نہیں ہے۔ پولیس کے مطابق متعلقہ گھر کو سیل کردیا گیا ہے، گھر سے کھانے پینے کی اشیاکے نمونے بھی حاصل کرلیے گئے اور گھر میں موجود سامان کو بھی تحویل میں لے لیا گیا ہے۔ایس ایس پی حیدرآباد سرفراز نواز کے مطابق بجلی نہ ہونے کے باعث اہل خانہ گھر میں جنریٹر چلا کر سوگئے تھے ہوسکتا ہے کہ دھویں کے باعث دم گھٹنے سے اموات ہوئی ہوں۔ اموات کی ہر پہلو سے تفتیش کی جارہی ہے۔تاحال اموات کی وجہ کا تعین نہیں ہوسکا،ہلاکت کی کیا وجہ ہے، آیا یہ ہلاکتیں جنریٹر کے دھوئیں سے ہوئی ہیں یا کوئی اور واقعہ ہے۔دوسری جانب وزیراعلیٰ سندھ نے واقعے کا نوٹس لیتے ہوئے کمشنر حیدرآباد اور ڈی آئی جی سے تفصیلی رپورٹ طلب کرلی ہے۔