تنظیم اساتذہ پاکستان کے قیام کو 50بر س مکمل ہو گئے،

293

کراچی ( اسٹاف رپورٹر)تنظیم اساتذہ پاکستان کے قیام کو 50بر س ہو گئے، اس دورن تنظیم نے قومی تعلیمی پالیسیوں، کیرکولم تیاری ،تعلیمی ورکشاپس،نصاب سازی ،پیشہ ورانہ ادارجاتی انتخابات،ٹیکسٹ بکس کانتقیدی جائزہ ہو یا تعلیمی اصلاحات کی تجاویز،قومی وبین الاقوامی تعلیمی کانفرنسز ہویا پری بجٹ سیمنارز ،نجی تعلیمی اداروں کی اولین غیر تجارتی سلسلے،قومی و بین الاقوامی سطح کے ایشوزہو یا تعلیمی تحقیق اور لٹریچرز کی تیاری، ریسرچ جرنل ہو یا ملک میں آفت زدہ علاقوں میں بحالی متاثرین وِ تعلیم ہر ہر پہلو سے تنظیم آگے رہی۔ 

یوم تاسیس تنظیم اساتذہ پاکستان کی گولڈن جوبلی سیشن کے موقع پر کراچی پریس کلب میں پریس کانفرنس کرتے ہوئے پروفیسر ابو عامر اعظمی صدر تنظیم اساتذہ سندھ، ذمہ داروں نے پریس کانفرنس کرتے ہوئے تجویز دی کہ کریکلم ونگ وزارت تعلیم اور وزارت مذہبی امور کے تحت قرآن اور اسلامیات کے وضع کردہ نصابات کوہرسطح پر نافذکیاجائے۔

اس نصاب کو سرکاری اور پرائیویٹ تمام تعلیمی اداروں کو اپنانے کا پابند کیا جائے۔نصابات سازی کو مرکز کے تحت رکھا جائے،اور آئین کے آرٹیکل نمبر 33 کی اس شق کی پابندی کی جائے اورمملکت شہریوں کے درمیان علاقائی، نسلی، قبائلی، فرقہ وارانہ اور صوبائی تعصبات کی حوصلہ شکنی کرے گی۔

مقررین نے کہا کہ اسلامی طریق زندگی ،بذریعہ تعلیم اور قومی زبان ،تدریس،تحقیق اور امتحانا ت کا ذریعہ ہیں اس لئے اسے اہمیت دی جائے اور اساتذ ہ کی تربیت کرنے کیساتھ تعلیم میں میرٹ کو نافذ کیا جائے ،کالجوں میں معیار تعلیم کو بلند کرنے ، پرائمری ، ثانوی تعلیم پر توجہ دینے کی ضرورت پر زور دیا۔