ملکی آبادی کا 30 فیصد حصہ 15سال بعد مسلمان ہوگا‘ روسی رہنما

204
ماسکو: مفتی اعظم روس راویل عین الدین اجلاس سے خطاب کررہے ہیں
ماسکو: مفتی اعظم روس راویل عین الدین اجلاس سے خطاب کررہے ہیں

ماسکو (انٹرنیشنل ڈیسک) روس کی مفتی کونسل کے سربراہ راویل عین الدین نے کہا ہے کہ 15 سال بعد روس کی آبادی کا 30 فیصد حصہ مسلمان ہو گا۔ دارالحکومت ماسکو میں منعقدہ اجلاس میں خطاب کرتے ہوئے عین الدین نے مزید کہا کہ مشرف بہ اسلام ہونے والے روسیوں کی تعداد میں اضافے سے روس کا اسلامی عنصر اسلام کی خدمت میں زیادہ اہمیت حاصل کر جائے گا۔ روس میں مسلمانوں کی تعداد میں ہر گزرتے دن کے ساتھ بڑھ رہی ہے، اس حوالے سے مزید بات کرتے ہوئے عین الدین نے کہا ہے کہ ماہرین کے اندازوں کے مطابق 15 سال بعد روس کی آبادی کا 30 فیصد مسلمانوں پر مشتمل ہو گا۔ انہوں نے کہا کہ گزشتہ عید الضحیٰ کے موقع پر صرف ماسکو کی مساجد میں نمازیوں کی تعداد 3 لاکھ 20 ہزار سے زائد اور ایک ریکارڈ تعداد تھی۔ انہوں نے کہا کہ مساجد میں نمازیوں کی تعداد میں اضافہ ملک میں مسلمانوں کی تعداد میں اضافے کی عکاسی کرتا ہے اور عیدین کی نمازوں میں شرکت کرنے والوں کی تعداد ہر سال گزشتہ سال کے مقابلے میں بڑھ رہی ہے۔ راویل عین الدین نے کہا ہے کہ روس کے بڑے شہروں میں موزوں ثقافتی اور تعلیمی انفراسٹرکچر کی حامل درجنوں نئی مساجد کی ضرورت ہے۔