بلدیہ شرقی کے محکمہ انسداد تجاوزات کے افسران سپریم کورٹ کے احکامات کو کمائی کا زریعہ بنا لیا،

95

کراچی (رپورٹ:منیر عقیل انصاری) بلدیہ شرقی کے محکمہ انسداد تجاوزات کے افسران نے سپریم کورٹ کے تجاوزات کے خاتمے کے احکامات پر عملدرآمد کرنے کے بجائے احکامات کو کمائی کا زریعہ بنا رکھا ہے،

بلدیہ ضلع شرقی کے گلشن زون کے ڈپٹی ڈائریکٹر افسر اور جمشید زون کے سہیل صادق کی ملی بھگت سے ضلع شرقی میں بھاری نذرانوں کے عیوض تجاوزات اورپتھاروں کی بھر مار سے شہریوں کو شدید مشکلات کا سامنا کرنا پڑ رہا جبکہ مذکورہ افسران کو منہ مانگا بھتہ نا دینے والے دوکانداروں کا سامان اختیا ر نہ ہونے کے باوجود اْٹھا کر بھاری بھتہ وصولی معمول بن چکی ہے ،

تفصیلات کے مطابق بلدیہ ضلع شرقی میں سپریم کورٹ کے احکامات کے برخلاف محکمہ انسداد تجاوزات میں تعینات افسران و ملازمین بھاری نذرانوں کے عیوض دیدہ دلیری سے تجاوزات اور پتھاروں کی سرپرستی میں مصروف ہیں جس کے باعث بلدیہ شرقی کے گلشن اور جمشید ٹاون زون میں ایک بار پھر تجاوزات اور پتھارے قائم کرنے والی مافیا نے سڑکوں ،فٹ پاتھوں اور مارکیٹوں کے اطراف قبضہ کرکے تجاوزات قائم کر لی ہیں،

ذرائع کے مطابق ضلع شرقی کے محکمہ انسداد تجاوزات کے دواسہیل صادق اور افسر نامی افسران تجاوزات اور پتھاروں سے مبینہ طور پرماہانہ لاکھوں روپے بھتہ وصول کر رہے رہیں ذرائع کے مطابق ایک طرف مذکورہ افسران ضلع بھر میں تجاوزات قائم کرنے والوں کی سرپرستی کر رہے ہیں تو دوسری جانب مذکورہ افسران بھتہ نہ دینے والے دوکانداروں کا سامان اْٹھا کرعدلیہ اور اعلیٰ حکام کی آنکھوں میں دھول جھونکنے میں مصروف ہیں ،

ذرائع کا کہنا ہے کہ محکمہ کی جانب سے پہلے دوکاندار سے بھتہ طلب کیا جاتا ہے بھتہ نہ دینے پر دکاندار کا سامان ضبط کر کے بلدیہ شرقی کے آفس پہنچا دیا جاتا ہے جبکہ اپنے سامان کے حصول کے لئے آنے والے دکاندار سے معاملات طے کرکے سامان واپس کردیا جاتا ہے گزشتہ روز بھی ڈپٹی ڈائریکٹر گلشن زون کی ہدایات پر ایک دکاندار کا سامان ضبط کیا گیا مذکورہ دکاندار کا کہنا ہے کہ 5000روپے ماہانہ بھتہ لینے کے بعد بھی سامان اْٹھایا گیا ہے،

مذکورہ دکاندار کے شور مچانے پر دفتر میں موجود افسران نے معاملے کو دبانے کے لئے سامان واپس کرانے کی یقین دہانی کراتے رہے تاہم دکاندار نے محکمہ انسداد تجاوزات کے افسران کے کرتوتوں کا پردہ چاک کر دیا ذرائع کے مطابق بلدیہ شرقی کے دونوں زونز میں پتھاروں اور تجاوزات سمیت فٹ پاتھ پر سامان رکھنے والے دکانداروں سے 3000روپے سے 5000روپے ماہانہ بھتہ وصول کیا جارہا ہے،

تاہم محکمہ انسداد تجاوزات کے افسران کی غیر قانونی سرگرمیوں اختیارات کے ناجائز استعمال کرکے شہریوں کو ہراساں کرنے کی متعدد شکایات کے باجود بلدیہ شرقی کے حکام نے پراسرار خاموشی اختیار کر رکھی ہے۔