پاکستان میں فضائی ٹریفک کو جزوی طور پر بحال کردیا گیا 

95
کراچی: فضائی حدود کی بندش کے باعث مسافروں کی بڑی تعداد جناح ائرپورٹ کے باہرجمع ہے
کراچی: فضائی حدود کی بندش کے باعث مسافروں کی بڑی تعداد جناح ائرپورٹ کے باہرجمع ہے

کراچی (اسٹاف رپورٹر) 55 گھنٹے سے زاید ائر ٹریفک کی معطلی کے بعد جمعہ کی شام 6 بجے پاکستان میں فضائی ٹریفک کو جزوی طور پر بحال کردیا گیا ہے ۔ 2 بھارتی طیاروں کی تباہی اور ایک پائلٹ کی گرفتاری کے بعد حملے کی بھارتی دھمکی کے بعد کسی بڑے نقصان سے بچنے کے لیے بدھ کی صبح پاکستان نے ہر قسم کے فضائی ٹریفک کو معطل کرنے کا اعلان کیا تھا تاہم اس پر مکمل عملدرآمد بتدریج ہوا اور بدھ کی سہ پہر تک پاکستان کی فضائی حدود پر مکمل طور پر پابندی عاید کردی گئی تھی ۔ جمعہ کو شام 6 بجے سول ایوی ایشن اتھارٹی نے فضائی ٹریفک کی جزوی بحالی کے احکامات جاری کیے ہیں جس کے مطابق کراچی ، اسلام آباد، پشاور اور کوئٹہ کے ائرپورٹ ہر قسم کی پروازوں کے لیے کھول دیے گئے ہیں جبکہ لاہور، ملتان ، فیصل آباد ، سیالکوٹ ، گلگت ، چترال ، سکھر ، رحیم یار خان ، لاڑکانہ سمیت دیگر تمام ائرپورٹوں پر پروازیں 4 مارچ کی دوپہر ایک بجے تک معطل رہیں گی۔ اسی طرح پاکستان کی مغربی سرحد کی جانب کی بین الاقوامی فضائی حدود پاکستان میں آمدورفت کے لیے کھولی گئی ہے جبکہ مشرق کی جانب سے پاکستان میں آمدو رفت مکمل طور پر بند رہے گی۔ پاکستان میں آمدو رفت کے لیے بین الاقوامی پروازیں مسقط، افغانستان اور ایران سے پاکستان میں داخلے کی فضائی کوریڈور استعمال کرسکیں گی جبکہ بھارت کی جانب والی مشرقی کوریڈور کے استعمال پر پابندی ہے ۔ سول ایوی ایشن اتھارٹی کے مطابق پاکستان کے اوپر سے گزرنے والی فضائی ٹریفک پر بھی 4 مارچ تک پابندی ہے اور پاکستان کی فضائی حدود صرف اور صرف پاکستان میںآمدو رفت کے لیے کھولی گئی ہیں ۔ مشرقی جانب کی فضائی سرحد بندہونے کی وجہ سے پی آئی اے نے بھی بنکاک ، بیجنگ اور کوالالمپور کے لیے اپنا فضائی آپریشن معطل رکھنے کا اعلان کیا ہے جبکہ باقی تمام بین الاقوامی روٹوں پر پی آئی اے نے اپنا فضائی آپریشن بحال کردیا ہے ۔ اسی طرح ملک کے بند ائرپورٹوں کے لیے بھی پی آئی اے کی فضائی سروس معطل رہے گی ۔ فضائی آپریشن کی اجازت کے بعد کراچی سے اڑان بھرنے والی پہلی پرواز پی آئی اے کی تھی جو شام 7 بجے کراچی سے اسلام آباد کے لیے روانہ ہوئی ۔