ٹرمپ کو پانے ہی وکیل نے نسل پرست فریبی قراردیدیا

120
واشنگٹن: کانگریس میں پیشی کے دوران مائیکل کوہن صدر ٹرمپ کے خلاف بیان دے رہے ہیں
واشنگٹن: کانگریس میں پیشی کے دوران مائیکل کوہن صدر ٹرمپ کے خلاف بیان دے رہے ہیں

واشنگٹن (انٹرنیشنل ڈیسک) امریکی صدر ڈونلڈ ٹرمپ کے سابق وکیل مائیکل کوہن نے کانگریس میں اپنی پیشی کے دوران صدر ڈونلڈ ٹرمپ پر سنگین الزامات عائد کردیے۔ کوہن نے ٹرمپ کو ایک نسل پرست، فریبی اور دغا باز شخص قرار دے دیا۔صدر ٹرمپ کے سابق وکیل مائیکل کوہن بدھ کے روز امریکی کانگریس کے ایک پینل کے سامنے پیش ہوئے۔ اس دوران انہوں نے ٹرمپ کے بارے میں ذاتی معلومات اور ممکنہ طور پر ان کے کاروبار سے متعلق انتہائی خطرناک معلومات فراہم کرنے کے علاوہ 2016ء کی صدارتی مہم کے دوران اور اس کے بعد کی صورت حال کے حوالے سے اہم انکشافات کیے۔ کوہن نے بتایا کہ ٹرمپ کو ہیلری کلنٹن کی ہیک شدہ ای میلز کو 2016ء کے صدارتی انتخابات سے قبل وکی لیکس پر جاری کیے جانے کے معاملے کا پہلے سے علم تھا۔ مائیکل کوہن کا کہنا تھا کہ اس وقت میں یہ موقع فراہم کیے جانے پر شکر گزار ہوں، جو مجھے رکارڈ کو دست کرنے کے لیے اور سچائی بیان کرنے کے لیے فراہم کیا گیا۔ مجھے کل کا انتظار ہے جب میں امریکی عوام کو اپنی کہانی سنا سکوں گا اور پھر میں یہ بات امریکی لوگوں پر چھوڑ دوں گا کہ وہ اس بات کا فیصلہ کریں کہ کون سچ بول رہا ہے۔ یاد رہے کہ 52 سالہ کوہن ٹرمپ کے لیے ایک دہائی سے زیادہ وقت تک بطور وکیل خدمات انجام دے چکے ہیں اور وہ صدر ٹرمپ کے حوالے سے بہت سے معاملات میں اہم حیثیت رکھتے ہیں۔ ادھر ایوان نمایندگان کی اسپیکر نینسی پلوسی نے بھی ایک ٹویٹ میں ایوان پر زور دیا ہے کہ وہ سوشل میڈیا پر تبصرے سوچ سمجھ کر کریں۔ انہوں نے ہاؤس کی اخلاقیات سے متعلق کمیٹی سے کہا ہے کہ وہ ایسے بیانات کی نگرانی کرے۔