بیہودہ فلموں کے ذریعے ملک میں عریانی کو فروغ دیاجارہا ہے‘ راشد نسیم

81
نائب امیر جماعت اسلامی پاکستان راشد نسیم منصورہ میں مرکزی تربیت گاہ کے شرکاسے خطاب کررہے ہیں
نائب امیر جماعت اسلامی پاکستان راشد نسیم منصورہ میں مرکزی تربیت گاہ کے شرکاسے خطاب کررہے ہیں

لاہور(نمائندہ جسارت)نائب امیر جماعت اسلامی پاکستان راشد نسیم نے کہا ہے کہ حکمرانوں کی ترجیحات میں اسلام نہیں ،حکمران بے ہودہ فلموں کے ذریعے ملک میں فحاشی اور عریانی کے مغربی کلچر کو فروغ دینا چاہتے ہیں ۔ یہ بات انہوں نے منصورہ میں جاری مرکزی تربیت گاہ کے شرکا سے خطاب کرتے ہوئے کہی۔ راشد نسیم نے کہا کہ مستقبل اسلام اور اسلامی تحریکوں کا ہے۔ اسلام کے خلاف عالمی استعمار کے تمام ہتھکنڈ ے اور سازشیں ناکام ہوچکی ہیں ۔امریکا اور برطانیہ سمیت پوری دنیا میں اسلام تیزی سے پھیل رہا ہے ۔عالمی سروے اور خود امریکی تھنک ٹینک اس بات کا اعتراف کررہے ہیں کہ آنے والے 2 عشروں میں خود امریکا میں اسلام سب سے بڑا مذہب اور امریکی صدر مسلمان ہوگا۔انہوں نے کہا کہ پاکستانی عوام اسلا م سے بے پناہ محبت کرتے ہیں اور ملک میں خلافت راشدہ کا نظام چاہتے ہیں یہی وجہ ہے کہ سیکولر اور لبرل جماعتیں بھی پاکستان کو مدینے کی طرز کی ریاست بنانے کا نعرہ لگانے پر مجبور ہیں ۔انہوں نے کہا کہ ملک و قوم کے تمام مسائل کا ایک ہی حل ہے کہ پاکستان میں نظام مصطفی ؐ کو نافذ کیا جائے ،سودی نظام معیشت سے توبہ کی جائے اور اسلام کے سیاسی ،معاشی ،عدالتی اور تعلیمی نظام کو رائج کیا جائے ۔انہوں نے کہا کہ ایک طرف حکمران پاکستان کو مدینے کی طرز پر اسلامی و فلاحی ریاست بنانے کی بات کرتے ہیں اور دوسری طرف آئی ایم ایف اور ورلڈ بینک سے سودی قرض کے حصول کے لیے ان کی تمام شرائط پوری کررہے ہیں ۔ایک طرف ملک میں سینما ہال کھولنے ،فلم اور ڈراموں کو پروموٹ کرنے کے لیے 20 ارب روپے کی سبسڈی دی جارہی ہے اوردوسری طرف حج اخراجات میں ڈیڑھ لاکھ سے زائد کا اضافہ کردیا گیا ہے ،حالانکہ صرف 4 ارب روپے کی سبسڈی دے کر حکومت پونے 2لاکھ حاجیوں کی دعائیں لے سکتی تھی ۔