نوجوانوں کو گمراہی میں دھکیلا جارہاہے

272

پاکستان جس کی بنیاد اسلام کے نام پر رکھی گئی تھی لیکن یہاں غیر شرعی تہواروں کے لیے بڑے زور و شور سے تیاریاں کی جاتی ہیں اور انہیں منایا جاتا ہے۔ اس کی روک تھام کے لیے اقدامات کی ضرورت ہے۔ 14 فروری جو ہمارا تہوار نہیں اس کے لیے فضول خرچی کی جاتی ہے اور نوجوانوں کو گمراہی میں دھکیلا جاتا ہے۔ میری حکومت سے گزارش ہے کہ اس دن کو منانے پر سخت پاندی عائد کی جائے اور خلاف ورزی کرنے والوں کے خلاف کارروائی کی جائے۔
مریم حسن، جامعتہ المحصنات کراچی
چائے کا بے ہودہ اشتہار بند کیا جائے
قمر چائے کا اشتہار جو ایک وقت میں بہت سارے چینل پر دکھایا جارہا ہے جو ہمارے معاشرے میں بے حیائی اور بے راہ روی کا باعث بن رہا ہے اور یہ اشتہار پیمرا شق نمبر 14 کی خلاف ورزی کررہا ہے۔ پیمرا سے گزارش ہے کہ اس اشتہار پر پابندی لگائی جائے۔
فضا سلام، عرشمہ طارق، بفرزون کراچی
پیمرا قوانین پر عمل درآمد کرایا جائے
پیمرا ضابطہ اخلاق کی شق 14 میں چینلوں کو ذمے دار بنایا گیا ہے کہ اشتہارات بناتے وقت پیمرا قوانین کو ملحوظ رکھیں اور پابند کیا گیا ہے کہ فحاشی کی حوصلہ افزائی نہیں کی جائے لیکن اشتہارات اس قانون کی کھلی خلاف ورزی کرتے نظر آرہے ہیں۔ لہٰذا اشتہارات پر پابندی لگائی جائے۔
انجم محمود
شراب اور بسنت کی آزادی
اسلامی جمہوریہ پاکستان میں شراب نوشی پر پابندی عائد کرنے کے بل کو اسمبلی کے منتخب نمائندوں کی جانب سے مسترد کیا جانا نہایت افسوس ناک ہے۔ ایک طرف شراب کی خرید و فروخت کی آزادی دوسری طرف بسنت منانے کی کھلی چھوٹ۔ یہ کیسا پاکستان بنایا جارہا ہے؟ کیا یہی ہے وہ ’’نیا پاکستان‘‘ جس کا نعرہ لگایا گیا تھا۔ کیا مدینہ کی اسلامی فلاحی ریاست میں ایسا ہی معاشرہ تشکیل دیا گیا تھا؟ حکومت خدارا ہوش کے ناخن لے اور پاکستان کی نظریاتی بنیادوں کو نہ بھولے۔ یہ ملک اسلام کے نام پر بنا تھا اور اس میں اس قسم کی خرافات کی کوئی گنجائش نہیں۔ ہم اس کی شدید مذمت کرتے ہیں۔
ام منیب، بلوچ کالونی، کراچی
بیٹی تو رحمت ہے
آج کل کے ڈرامے معاشرے کو اچھا پیغام نہیں دے رہے۔ ایک ڈراما ’’بیٹی‘‘ دکھایا جارہا ہے اس میں عورت کی کوئی عزت نہیں دکھائی جارہی، بیٹی کو بوجھ بنایا جارہا ہے کہ بیٹی ہو گی تو گھر میں نحوست پیدا ہوجائے گی اس کی شادی بیاہ کا خرچہ ہوتا ہے اس لیے اس کو پیدا ہوتے ہی مار دیا جائے۔ جب کہ ہمارے نبیؐ نے عورت کو ایک رتبہ اور مقام دیا ہے۔ بیٹی تو رحمت ہے جس گھر میں پیدا ہوتی ہیں وہاں رونق ہوتی ہے۔
لبنیٰ محسن، ناظم آباد
پرانا پاکستان ہی اچھا ہے
وزیر اطلاعات پنجاب فیاض چوہان کا ایک بیان نظر سے گزرا جس کو پڑھ کر ان کی ذہنی حالت پر بہت افسوس ہوا جو لوگ پاکستان کو مدینے جیسی ریاست بنانے کا نعرہ لگاتے ہیں اور انتہائی گھٹیا اور خونیں کھیل کا تقابل سنت ابراہیمی کے ساتھ کرتے ہیں اور ہماری ثقافت قرار دیتے ہیں یہ کردار ہے ان لوگوں کا جو نیا پاکستان بنانے کا عزم لے کر چلے۔ خدارا ہمیں اپنے پرانے پاکستان سے بڑی محبت ہے جس کو ہمارے بزرگوں نے بڑی قربانیوں کے بعد بنایا ہے۔ ہمیں ایسا نیا پاکستان نہیں چاہیے جس میں سنتوں کا مذاق بنایا جائے۔ کوئی مسلمان اس توہین کو برداشت نہیں کرسکتا۔
نصرت بشیر، غازی اسٹریٹ، صدیق وہاب روڈ، کراچی
جادو کی تشہیر کی جارہی ہے
ٹی وی ڈراموں میں جادو کی تشہیر کی جارہی ہے، اسلام میں جادو حرام ہے، یہ کون سا اسلام پیش کیا جارہا ہے۔ خدارا ایسے پروگرام فوراً بند کروائیں۔ دوسرا ڈراما ’’نور بی بی‘‘ میں لوگوں کو اپنا غلام بنایا جارہا ہے۔ آپ سے گزارش ہے ان پروگرام کو بند کیا جائے۔
ثمینہ محمد علی، ناظم آباد
تبدیلی کے نام پر مہنگائی کا عروج
ہمارے ملک میں تبدیلی کے نام پر مہنگائی بہت زیادہ ہوگئی ہے۔ تیل، آٹا، دالیں، سبزیاں، گیس، بجلی یہ بنیادی ضروریات ہیں اور یہ ہی غریب کی دسترس سے باہر ہیں۔ خدارا اس طرف ضرور دیکھیں، وزیراعظم صاحب تک یہ بات پہنچانی بہت ضروری ہے کہ غریب آدمی کی بنیادی ضرورت کی چیزیں اس کی قوت خرید میں ہوں جو وہ زندہ رہ سکے۔
صالحہ بیگم
ڈاکو مافیا پھر سے سرگرم ہوگیا
کراچی میں محلے محلے ڈاکو مافیا ایک بار پھر سرگرم ہوگیا ہے۔ اسٹریٹ کرائم پھیل رہے ہیں۔ ڈیفنس ویو فیز II صبح کو واک کرتی خواتین سے بالیاں اُتروالی جاتی ہیں تو کہیں کالج یونیورسٹی جاتی طالبات سے موبائل اور نقدی چھین لی جاتی ہے تو کہیں طالب علموں سے موٹر سائیکل ہتھیا جاتی ہیں تو کہیں چھوٹے بچوں اور بچیوں کے اغوا کی واردات رپورٹ ہورہی ہیں۔ کراچی میں امن وامان قائم کرنا، اسٹریٹ کرائم کا خاتمہ کرنا، مجرموں کو قانون کی گرفت میں لانا حکومت کی ذمے داری ہے تا کہ خوف و ہراس کے بجائے شہر میں بے خوفی اور سکون کی فضا ہو۔
تنویر فاطمہ، ڈیفنس ویو