بریگزٹ پر یورپ برطانیہ تعطل برقرار‘ تھریسامے پُرعزم

55
برسلز: برطانوی وزیراعظم تھریسامے یورپی کونسل کے صدر ڈونلڈ ٹسک سے ملاقات کررہی ہیں

برسلز (انٹرنیشنل ڈیسک) بریگزٹ سے متعلق یونین اور لندن حکومت کے مابین تعطل تاحال برقرار ہے۔ یورپی یونین مزید کسی قسم کے مذاکرات نہ کرنے کے دو ٹوک موقف پر قائم ہے جبکہ برطانوی پارلیمان تھریسانے کے مجوزہ منصوبے کو مسترد کر چکی ہے۔ اسی دوران برطانوی وزیر اعظم گزشتہ روز برسلز پہنچی تھیں جہاں انہوں نے یورپی رہنماؤں سے بات چیت کے بعد اس عزم کا اظہار کیا ہے کہ وہ بریگزٹ کا عمل بروقت مکمل کر لیں گی۔ تھریسا مے کے یورپی یونین سے مذاکرات کے نتیجے میں طے شدہ سمجھوتے پر برطانوی دارالعوام کے ارکان نے سخت اعتراضات کیے ہیں اور وہ اس میں ترمیم چاہتے ہیں تاہم اس کے باوجود مے کا کہنا ہے کہ وہ 29 مارچ کی ڈیڈ لائن سے قبل ترتیب وار علاحدگی کا عمل مکمل کر لیں گی۔ البتہ یہ آسان نہیں ہوگا۔ دوسری جانب یورپی کمیشن کے صدر ژاں کلاڈینکر نے کہا ہے کہ بریگزٹ برطانیہ اور آئرلینڈ ہی کا نہیں بلکہ یورپ کا مسئلہ ہے جو کہ ہمارے لیے خدشات پیدا کر رہا ہے۔