وفاق صوبوں سے کٹوتی کے بجائے اپنے فنڈز سے فاٹا کو پیکج دے ،سراج الحق

58
لاہور: امیر جماعت اسلامی پاکستان سراج الحق مرکزی مجلس عاملہ سے خطاب کررہے ہیں
لاہور: امیر جماعت اسلامی پاکستان سراج الحق مرکزی مجلس عاملہ سے خطاب کررہے ہیں

لاہور( نمائندہ جسارت)امیر جماعت اسلامی پاکستان سینیٹر سراج الحق نے جماعت اسلامی کی مرکزی مجلس عاملہ کے اجلاس سے خطاب کرتے ہوئے کہاہے کہ حکومت کی معاشی پالیسیوں کی مسلسل ناکامی سے عام آدمی مشکلات سے دوچار ہوگیاہے ۔ مہنگائی بے قابو ہوچکی ہے اور حکومت عوام کا خون نچوڑنے والوں کے ہاتھوں بے بس نظرآتی ہے ۔ وسائل کی تقسیم میں مرکز صوبوں کو زیادہ حصہ دے اور صوبوں کے حصے سے کٹوتی کر کے فاٹا کو دینے کے بجائے وفاقی حکومت اپنی طرف سے ترقیاتی فنڈز اور بحالی پیکج دے ۔ اجلاس میں سیکرٹری جنرل لیاقت بلوچ ، نائب امراپروفیسر محمد ابراہیم خان ،میاں محمد اسلم ، حافظ محمد ادریس ، راشد نسیم ، اسدا للہ بھٹو ، ڈپٹی سیکرٹریز جنرل اور صوبائی امرا اور ارکان مجلس عاملہ نے شرکت کی ۔ سینیٹر سراج الحق نے 5 فروری کو قومی جوش وجذبے سے یوم یکجہتی کشمیر منانے پر قوم کا شکریہ ادا کرتے ہوئے کہاکہ کشمیریوں کو بھارت کے ظلم اور غاصبانہ قبضے سے نجات دلانے اور آزادی کی منزل تک پہنچنے کے لیے قوم کو اسی طرح متحد ہوکر مسلسل آگے بڑھناہوگا ۔ کشمیر پاکستان کی شہ رگ ہے ۔ دشمن کے قبضے سے اپنی شہ رگ آزادکرانے کے لیے زبان کے ساتھ ساتھ ہاتھ بھی ہلانا ہوں گے ۔ انہوں نے کہاکہ پاکستان حقیقی معنوں میں اس دن مکمل ہوگا جب کشمیرآزاد ہو کر پاکستان کا باقاعدہ حصہ بن جائے گا ۔سینیٹر سراج الحق نے کہاکہ پاکستانی قوم نے دہشت گرد ی کے خلاف بڑی قربانیاں دی ہیں اب ان قربانیوں کا منطقی نتیجہ یہ ہوناچاہیے کہ پاکستان کو افغانستان کی صورت میں ایک پرامن پڑوسی مل جائے۔ پرامن افغانستان پاکستان کی ضرورت ہے ۔ پاکستان اور افغانستان کے برادرانہ تعلقات اسی صورت مضبوط اور مستحکم ہوسکتے ہیں جب دونوں ممالک ایک دوسرے کے امن و خوشحالی کو مقدم سمجھتے ہوئے آگے بڑھیں گے ۔ انہوں نے کہاکہ حکومت کو فاٹا کی محرومیوں کے ازالے کے لیے جلد از جلد عملی اقدامات اٹھانا ہوں گے ، خاص طور پر 100 ارب روپے کے بحالی پیکج کی جلد فراہمی کو یقینی بناناہوگا۔