ہالینڈ: اسلام دشمن گیئرٹ ولڈرز کا دست راست مسلمان ہوگیا

181
ہالینڈ: نومسلم جورم وان کلیورین (بائیں) کی اسلام دشمن گیئرٹ ولڈرز کے ساتھ فائل فوٹو
ہالینڈ: نومسلم جورم وان کلیورین (بائیں) کی اسلام دشمن گیئرٹ ولڈرز کے ساتھ فائل فوٹو

 

دی ہیگ (انٹرنیشنل ڈیسک) ہالینڈ کے اسلام دشمن سیاستدان گیئرٹ ولڈرز کے دیرینہ ساتھی اور سابق دست راست جورم وان کلیورین نے اسلام قبول کرنے کا اعلان کردیا۔ ان کے اس انکشاف پر ہالینڈ سمیت دنیا بھر میں بہت سے حلقے حیران جب کہ مسلمان انتہائی خوش ہیں۔ اے ایف پی کی منگل کے روز جاری کردہ رپورٹ کے مطابق ڈچ پارلیمان کے انتہائی دائیں بازو کے ایک سابق رکن اور ماضی میں گیئرٹ ولڈرز کے دست راست سمجھے جانے والے سیاستدان جورم وان کلیورین نے اسلام قبول کرلیا ہے۔ وان کلیورین ماضی میں گیئرٹ ولڈرز کی سیاسی جماعت فریڈم پارٹی کی طرف سے ڈچ پارلیمان کے ایوان زیریں کے 7 سال تک رکن رہے تھے اور اس دوران انہوں نے سیاسی سطح پر ایک مذہب کے طور پر اسلام پر سخت تنقید کرتے ہوئے اس کی ہر ممکنہ حوالے سے مخالفت کی تھی۔ اس عرصے کے دوران اپنے بہت سخت گیر موقف کے حق میں دلائل دیتے ہوئے وان کلیورن نے درجنوں بار یہ مطالبے بھی کیے تھے کہ ہالینڈ میں برقع اور مساجد کے میناروں پر پابندی ہونا چاہیے۔ ڈچ روزنامے الگی مین ڈاگ بلاڈ کے مطابق یہ وہ دور تھا، جب گیئرٹ ولڈرز کے ساتھ مل کر جورم وان کلیورین نے یہاں تک بھی کہہ دیا تھا کہ ہم اپنے ملک میں کوئی اسلام نہیں چاہتے اور اگر لازمی ہو تو کم سے کم ممکنہ حد تک۔ لیکن اب 40 سالہ جورم وان کلیورین نے کہا ہے کہ وہ ایک اسلام مخالف کتاب لکھ رہے تھے کہ اس عمل کے تقریباً وسط میں ان کا ذہن ہی بدل گیا۔ پھر جو کچھ انہوں نے لکھا، وہ ان اعتراضات کی تردید اور جوابات تھے، جو غیر مسلم اسلام پر ایک مذہب کے طور پر کرتے ہیں۔ وان کلیورن نے ڈچ اخبار این آر سی کو بتایا کہ تب تک جو کچھ بھی میں نے لکھا تھا، اگر وہ سچ ہے، تو میری اپنی رائے میں میں مسلمان ہو چکا ہوں۔ جورم وان کلیورین نے اس اخبار کو یہ بھی بتایا کہ انہوں نے گزشتہ برس 26 اکتوبر کو باقاعدہ طور پر اسلام قبول کر لیا تھا۔ ہالینڈ کے روزنامہ این آر سی نے اس بارے میں وان کلیورن کے ایک انٹرویو کے ساتھ یہ بھی لکھا ہے کہ جلد ہی اس ڈچ سیاستدان کی لکھی ایک کتاب بھی منظر عام پر آ رہی ہے، جس کا عنوان ہے ’ مرتد ولادین دہشت گردی کے زمانے میں مسیحیت سے اسلام تک۔