صہیونی فوج کے ہاتھوں ایک اور فلسطینی بچی شہید 

110
رام اللہ: سماح زہیر کی لاش سڑک پر پڑی ہے‘ چھوٹی تصویر شہید بچی کی 10روز قبل عمرہ ادا کرنے کی ہے 

مقبوضہ بیت المقدس (انٹرنیشنل ڈیسک) فلسطین کے مقبوضہ بیت المقدس میں اسرائیلی فوج نے وحشیانہ درندگی کا مظاہرہ کرتے ہوئے 16 سالہ فلسطینی بچی کو گولیاں مارکر شہید کردیا۔ فلسطینی ذرائع ابلاغ کے مطابق بدھ کی شام مشرقی بیت المقدس میں صہیونی فوج نے زعیم چیک پوسٹ سے گزرنے والی سماح زہیر مبارک کو بے دردی کے ساتھ پشت پر گولیاں مار کر شہید کردیا اور حسب معمول فلسطینی بچی کے قتل کے بعد اس پر چاقو سے حملے کا الزام عائد کردیا۔ انسانی حقوق کی تنظیموں کے مطابق لڑکی کو شدید زخمی حالت میں اسپتال منتقل کیا گیا، جہاں وہ زخموں کی تاب نہ لاتے ہوئے دم توڑ گئی۔ عینی شاہدین نے بتایا کہ اسرائیلی فوج نے بچی کو چہرے سے نقاب اٹھانے کا کہا، جو اس نے نہیں مانا۔ اس پر اسے بے دردی سے شہید کردیا۔ فلسطینی ہلال احمر اور عینی شاہدین نے بتایا کہ اسرائیلی فوج کی طرف سے سماح زہیر مبارک کو چیک پوسٹ سے گزرنے کے بعد گولیاں مار کرشہید کیا گیا۔ وہ چیک پوسٹ سے گزر کر مشرق میں معالیہ ادومیم یہودی کالونی کے قریب اپنے گھر کی طرف جا رہی تھی۔ غزہ کی پٹی میں مقیم شہیدہ کے خاندان نے کہا ہے کہ ان کہ بیٹی حافظ قرآن تھی اور وہ تعلیم کے حصول کی غرض سے رام اللہ کے نواحی علاقے ام الشرائط میں رہایش پذیر تھی۔ وہ 10روز قبل عمرہ ادا کرکے رام اللہ پہنچی تھی۔