برآمدات کے کلچر کے فروغ کیلیے تمام مراعات دیں گے، عبدالرزاق داؤد

22

اسلام آباد (نمائندہ جسارت) وزیراعظم کے مشیر برائے تجارت و ٹیکسٹائل عبدالرزاق داؤد نے کہا ہے کہ ایکسپورٹ کے پانچوں سیکٹرز کو مراعات دے رہے ہیں، ایکسپورٹ کلچر کو فروغ دینے کیلیے تمام مراعات دینگے، امپورٹ کلچر کی حوصلہ شکنی کی جائے۔ انہوں نے کہا کہ سالانہ 40 لاکھ نوجوانوں کو روزگار کی ضرورت ہے اور یہ کسی بھی بڑے ملک سے زیادہ تعداد ہے۔ ہمیں روزگار کے مواقع پیدا کرنے پر توجہ دینا ہوگی۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے لاہور چیمبر آف کامرس اینڈ انڈسٹری میں خطاب کرتے ہوئے کیا۔ عبد الرزاق داؤد نے کہا کہکر نٹ اکاؤنٹ خسارے کوختم کریں گے، تمام صنعتی و تجارتی اداروں نے ودہولڈنگ ٹیکس کے حوالے سے اپنا احتجاج ریکارڈ کرایا ہے، ایف بی آر چیئرمین نے مجھ سے وعدہ کیا ہے کہ ود ہولڈنگ ٹیکس کا مسئلہ حل کرینگے، 25 ارب ڈالر کی ایکسپورٹ کا ہدف حاصل کرنا چاہتے ہیں، نومبر میں ریفنڈز کا معاملہ حل ہوجائے گا، کابینہ کے آئندہ اجلاس میں نیشنل ٹیرف پالیسی منظور کرائی جائے گی۔ ہمارا ٹیرف اسٹرکچر ایکسپورٹ کی حوصلہ افزائی نہیں کرتا، ہمیں خام مال کے بجائے تیار مصنوعات ایکسپورٹ کرنی چاہییں۔ انہوں نے مزید کہا کہ ہم 25 ارب ڈالر کی ایکسپورٹ کا ہدف حاصل کرنا چاہتے ہیں اور اس کیلیے منصوبہ بندی کرکے پیشرفت کر رہے ہیں۔ رائس ایکسپورٹرز مشکل حالات کے باوجود ایکسپورٹ کررہے ہیں انہیں سیلوٹ پیش کرتے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ چینی سفیر سے پانچ ملاقاتیں کرچکا ہوں، چینی سفیر پاکستان اور چین کے درمیان تجارتی توازن چاہتے ہیں، وزیراعظم 2 نومبر کو چین جارہے ہیں، چین کے ساتھ ایف ٹی اے پر بات ہوگی۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ