ٹنڈوالہٰیار، رشوت نہ دینے پر پولیس کا ٹرک ڈرائیور پر تشدد

56

ٹنڈوالہٰیار (نمائندہ جسارت) پیسے دو گے تو شہر میں داخل ہوگے، ٹنڈوالہٰیار شہر کے داخلی و خارجی علاقے کیریا شاخ کے مقام پر حیدرآباد سے ٹنڈوالہٰیار آنے والے مزدا ٹرک کو پولیس نے روکا، روکنے کے بعد پولیس نے ٹرک ڈرائیور آصف پتافی سے ٹنڈوالہٰیار انٹری کے نام پر رشوت طلب کی، رشوت نا دینے پر مذکورہ پولیس اہلکاروں نے اس کو تشدد کا نشانہ بنایا، جس پر مذکورہ ڈرائیور اور پولیس اہلکاروں میں جھگڑا ہوگیا، جھگڑے میں ایک پولیس اہلکار کی وردی پھٹ گئی، جس پر پولیس اہلکار نے مذکورہ مزدہ ٹرک کے ڈرائیور آصف پتافی کو حراست میں لے کر اے سیکشن تھانے میں بند کردیا۔ اطلاع کے بعد بلاجواز ڈرائیور پر ہونے والے تشدد اور اس کو تھانے میں بند کرنے کیخلاف درجنوں ڈرائیوروں نے کیریا شاخ کے مقام پر پولیس کیخلاف احتجاجی مظاہرہ کیا۔ مظاہرین کا کہنا تھا کہ کیریا شاخ اور دیگر شہر کے داخلی و خارجی راستوں پر پولیس ڈرائیوروں سے زبردستی رشوت طلب کرتی ہے اور رشوت نا دینے پر انہیں بلاجواز تشدد کا نشانہ بناکر تھانے میں بند کرنے یا ان کی گاڑی کو اپنی تحویل میں لے لیتی ہے۔ انہوں نے بتایا کہ ٹنڈوالہٰیار پولیس کی جانب سے ڈرائیوروں سے بلاجواز رشوت لیتے ہوئے ایک شہری نے ثبوت کے طور پر رشوت لیتے ہوئے ایک وڈیو بھی بناکر سوشل میڈیا پر چھوڑی تھی، اس کے باجود بھی پولیس انتظامیہ نے ویڈیو میں دکھائے گئے رشوت لینے والے پولیس اہلکاروں کیخلاف ایکشن نہیں لیا۔ ہم پولیس کے اس رویے سے بے حد پریشان ہیں۔ انہوں نے کہا کہ تشدد کا نشانہ بننے والے ڈرائیور کو علاج کے لیے اسپتال منتقل کیا جائے اور ڈرائیور پر تشدد کرنے والے پولیس اہلکاروں کیخلاف فوری طور پر کارروائی کرکے انہیں معطل کیا جائے۔ بصورت دیگر سندھ بھر میں احتجاجی مظاہرہ کریں گے۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ