امریکی نوجوانوں میں بڑھتا مٹاپا فوجی بھرتیوں میں رکاوٹ بن گیا

45

واشنگٹن(انٹرنیشنل ڈیسک) امریکی نوجوانوں میں بڑھتی ہوئی مٹاپے کی بیماری اب روس کے سائبر کرائمز سے زیادہ خطرناک ہوگئی۔ امریکی وزارت دفاع کو اس تناظر میں نیشنل سیکورٹی کے ایک بڑے خطرے کا سامنا ہے۔ اس کی وجہ سے نئے فوجیوں کی بھرتی میں مشکلات پیدا ہو رہی ہیں۔ ایک رپورٹ کے مطابق نو عمر امریکیوں کی ایک تہائی تعداد موٹاپے کا شکار ہے۔ پینٹاگوان کے مطابق 17 سے 24 برس کے 70فیصد سے زائد امریکی نوجوان فوج میں بھرتی ہونے کے معیار پر پورا نہیں اترتے۔ امریکی ریاستی کی کونسل کے مطابق نوجوانوں میں مٹاپا ایک وبا کی صورت اختیار کر چکا ہے۔رواں سال فوجی بھرتی کا ہدف 76ہزار 500 تھا اور اس میں ساڑھے 6 ہزار اب بھی کم ہیں۔ رپورٹ کے مطابق ان حقائق سے پہلو تہی امریکی قومی سلامتی کے لیے شدید مشکلات کا باعث ہو گی۔ امریکی وزیر دفاع جیمز میٹس بھی اس تناظر میں اپنی تشویش کا اظہار کر چکے ہیں۔ انہوں نے واضح کیا کہ 18 سے 24 برس کی عمر کے 71فیصد نوجوان فوج میں شمولیت کے قابل نہیں ہیں۔
امریکی نوجوان/مٹاپا

Print Friendly, PDF & Email
حصہ

جواب چھوڑ دیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.