گرین اور اورنج بس منصوبوں میں غیر ضروری تاخیر شہریوں کیلئے وبال بن گئی

46

کراچی(اسٹا ف رپورٹر)شہرقائدمیں وفاقی حکومت کی جانب سے تعمیر کیا جانے والا گرین لائن میٹرو بس منصوبہ تاخیر کا شکار ہے، غیر ضروری اور طویل تاخیر اور ایک عرصے سے جاری تعمیراتی کام شہریوں کے لیے وبال جان بن گیا ہے۔گرین لائن منصوبہ مسلم لیگ(ن)کی سابق حکومت نے شروع کیا تھا۔ ابتدائی اندازے کے مطابق منصوبہ کو پچھلے سال دسمبر میں مکمل ہونا تھا لیکن بعد میں منصوبے میں توسیع کی گئی اور تکمیل کی مدت اپریل 2018 ء تک بڑھائی گئی، تاہم منصوبہ ابھی تک تکمیل کا منتظر ہے۔ایک عرصے سے زیر تعمیر منصوبہ کی وجہ سے نہ صرف ٹریفک جام کے مسائل درپیش ہیں بلکہ گرین لائن کے روٹ پر اور اس کے آس پاس کاروبار کرنے والے اور رہائشی افراد کو بھی بہت سارے مسائل کا سامنا ہے۔گزشتہ روزگلبہار سینیٹری مارکیٹ کے قریب گرین لائن میٹرو بس کے فلائی اوور پر رنگ وروغن کے لیے سڑک کے درمیان رکھا گیا جنگلا تیز رفتار گاڑی کی ٹکر سے سڑک پر آ گرا، سڑک سے گزرنے والی ایمبولنس اور دیگر گاڑیوں کو شدید نقصان پہنچا۔حادثہ میں خوش قسمتی سے کوئی جانی نقصان تو نہیں ہوا البتہ سڑک پر ٹریفک کی آمدروفت بری طرح متاثر ہوئی، عینی شاہدین نے پروجیکٹ انتظامیہ وعملے کی غفلت ولاپرواہی کو حادثے کی وجہ قرار دیا۔شہریوں کے مطابق گرین لائن بس منصوبے کا کچھوے کی رفتار سے چلتا تعمیراتی کام ان کے لیے درد سر بنا ہوا ہے۔گرین لائن بس منصوبے کے لیے گرومندر سے نارتھ کراچی تک درجنوں مقامات پر تعمیراتی کام جاری ہے مگر سڑکوں پر جابجا رکھی مشینری اور دیگر تعمیراتی سامان نشاندہی نہ ہونے کے سبب شہریوں کے لیے خوف کی علامت اور حادثات میں اضافے کا سبب بن گیا ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ