سانحات سے نمٹنے کے لیے لوگوں کی تربیت ضروری ہے

42

کراچی (اسٹاف رپورٹر)پاکستان سمیت دنیا بھر میں قدرتی آفات سے بچاؤ کا عالمی دمنا یاگیا،اس موقع پر صدر الخدمت سندھ ڈاکٹر سید تبسم جعفری نے کہاہے کہ الخدمت فاؤنڈیشن سندھ کے شعبے ڈیزاسٹر مینجمنٹ کے تحت احتیاطی تدابیر اختیار کرنے اور ایمرجنسی کے شکار لوگوں کو ریسکیو کرنے کے لیے ورکشاپ کا انعقاد کیاجاتاہے،واک کے ذریعے لوگ میں سانحات سے نمٹنے کے لیے آگاہی فراہم کی جاتی ہے۔ الخدمت فاؤنڈیشن کے تربیت یافتہ رضاکاروں نے مختلف سانحات پر بر وقت کارروائی کرکے ہزاروں کی تعداد میں جا نیں بچائیں۔ انہوں نے کہا کہ سندھ میں سیلاب سے متاثرہ علاقوں میں 537مکانات تعمیر کرکے متاثرین کو دیے گئے،7میڈیکل سینٹر مکمل ہوئے،13مساجد تعمیر کراوائی گئیں،ہزار وں افراد کومفتی طبی امداد، تیار اور خشک راشن اور خیمے فراہم کیے گئے۔دہشت گردی کے واقعات کے دوران کئی بم دھماکوں میں زخمیوں کو اسپتال منتقل کیا ،بلکہ چھوٹی بڑی شاہراہوں پر ہونے والے ہولناک حادثات میں لوگوں کو فوری طبی امداد فراہم کی گئی ۔انہوں نے کہا کہ 8اکتوبرکو پاکستان میں آنے والے ہولناک زلزلے ، 2010-11-12ء میں سندھ میں بارشوں اور بد ترین سیلاب ،بلوچستان کے علاقے آواران میں زلزلے، پاکستان میں دہشت گردوں سے نمٹنے کے لیے فاٹا، سوات ،وزیر ستان سے لاکھوں افراد کی دوسرے شہروں میں عارضی کیمپوں میں منتقلی اور سندھ کے ضلع تھر پارکر میں بد ترین قحط سے بچوں ،ضعیفوں اور مویشیوں کی ہلاکت کے موقع پر الخدمت کے تربیت یافتہ رضاکاروں نے ہزاروں افراد کو ریسکیو کیا اور انہیں امداد فراہم کرکے بے مثا ل خدمات انجام دیں۔انہوں نے کہا کہ سانحات سے نمٹنے کے لیے الخدمت کے راضاکاروں کی مختلف سطحوں پرتربیت جاری رہتی ہیں ،انہوں نے کہا کہ عوام کوبھی اپنی مدد آپ کے تحت کسی مشکل سے نکلنے اور دوسروں کونکالنے کی تربیت حاصل کرنی چاہیے ۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ

جواب چھوڑ دیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.