سابق حکومت کی نا اہلی کے باعث لڑکھڑاتی معیشت ورثے میں ملی، چودھری محمد سرور

57

لاہور (پانا) گورنر پنجاب چودھری محمد سرور نے کہا ہے کہ سابق حکومت کے غلط فیصلوں اور کرپشن کی وجہ سے ہماری حکومت کو لڑکھڑاتی ہوئی معیشت ورثے میں ملی ہے اور معیشت کے پہیے کو دوبارہ پٹڑی پر لانے کے لیے بلا شبہ تھوڑا وقت درکار ہے۔ وزیر اعظم پاکستان عمران خان کی قیادت میں عوام کو بہت جلد اس مشکل وقت سے نجات مل جائے گی۔ بدقسمتی سے ماضی میں جو بھی حکومت آئی اس نے لانگ ٹرم پالیسیاں مرتب کرنے کے بجائے ایڈہاک ازم پر کام کیا۔ پی ٹی آئی کی حکومت نوجوانوں کی سپورٹ سے برسر اقتدار آئی ہے اور حکومت ان کے مسائل ترجیحی بنیادوں پر حل کرے گی۔ ان خیالات کا اظہار اُنہوں نے گورنر ہاؤس لاہور میں نیشنل کالج آف بزنس ایڈمنسٹریشن اینڈ اکنامکس کے طلبہ و طالبات کے وفد سے ملاقات کے دوران کیا۔ جنہوں نے نازیہ علی گیلانی کی قیادت میں اِن سے ملاقات کی۔ اس موقع پر سینئر صوبائی وزیر عبدالعلیم خان، بیگم گورنر پنجاب پروین سرور، ڈائریکٹر اسٹوڈنٹس افیئرز میڈم روزی رضوی بھی موجود تھیں۔ گورنر پنجاب نے کہا کہ پی ٹی آئی کھوکھلے نعروں اور جھوٹے وعدوں پر یقین نہیں رکھتی، بلکہ بانی پاکستان قائد اعظم محمد علی جناح ؒ کے فرمان عمل کو اپنا نصب العین بنائے ہوئے ہیں۔ حکومت اختیارات کی مرکزیت کے بجائے اختیارات کی نچلی سطح پر منتقلی پر یقین رکھتی ہے اور یہی وجہ ہے کہ بلدیاتی نظام میں تبدیلیاں لائی جارہی ہیں۔ اب فیصلے لاہور میں نہیں ہوں گے بلکہ بلدیاتی نمائندے اپنے اپنے علاقوں کے فیصلے خود کریں گے۔ ترقیاتی فنڈ کا 30 فیصد بجٹ ویلیج کونسل کو دیا جائے گا۔ بدقسمتی سے 22 ملین بچے اسکولوں سے باہر ہیں، جو مختلف فیکٹریوں، دکانوں اور گھروں میں کام کرتے ہیں، ان بچوں کو اسکولوں میں لانے کے لیے جامع پالیسی تیار کی جارہی ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ