دنیا میں 82 کروڑ انسان بھوک اور خوراک کی کمی کا شکار

52

برلن (انٹرنیشنل ڈیسک) بھوک کے تازہ ترین عالمی انڈکس کے مطابق اس وقت دنیا بھر میں 82 کروڑ سے زائد انسان بھوک اور خوراک کی کمی کا شکار ہیں۔ گزشتہ 2 برس میں یہ تعداد بین الاقوامی سطح پر مسلح تنازعات اور جنگوں کی وجہ سے اور بڑھی ہے۔ عالمی سطح پر مجبورا فاقہ کشی، بھوک کے مسئلے اور خوراک کی کمی سے متعلق اعداد و شمار پر مشتمل رواں سال کے لیے بھوک کے عالمی انڈکس کی تفصیلات جمعرات کی شام جاری کی گئیں۔ یہ انڈکس بین الاقوامی سطح پر بھوک کے خاتمے کے لیے کوشاں جرمن تنظیم ورلڈ ہنگر ہیلپ کی طرف سے ہر سال جاری کیا جاتا ہے۔ انڈکس کے مطابق اس وقت کرہ ارض پر 12 کروڑ 40لاکھ انسان بھی ہیں، جن کا بھوک کا مسئلہ انتہائی شدید ہو کر فاقہ کشی بن چکا ہے۔ دوسری جانب اردن کی سرحد پر شامی پناہ گزینوں کے لیے قائم کردہ پناہ گزین کیمپ رکبان میں ہزاروں پناہ گزینوں کو خوراک اور ادیات کی شدید قلت کا سامنا ہے، اور ہزاروں شامی پناہ گزین موت کے منہ میں جاسکتے ہیں۔ خبر رساں اداروں کے مطابق رکبان پناہ گزین کیمپ کو خوراک اور دیگر بنیادی اشیا کی شدید قلت کا سامنا۔ اردنی حکام شامی پناہ گزین کیمپ تک امداد پہنچانے میں ناکام رہے ہیں۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ

جواب چھوڑ دیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.