پاکستانی نژادآسڑیلوی بلے باز عثمان خواجہ کی پاکستان کے خلاف پہلی سنچری

47

سید پرویز قیصر
پاکستان نژاد آسڑیلیائی بلے باز عثمان خواجہ پاکستان کے خلاف ٹیسٹ کرکٹ میں اپنی پہلی سنچری اسکور کرنے میں کامیاب رہے۔ دبئی میں کھیلے گئے پہلے ٹیسٹ کے آخری دن انہوں نے پاکستانی بولروں کا ڈٹ کے مقابلہ کیا اور 224 بالوں پر دس چوکوں کی مدد سے اپنی سنچری مکمل کی۔ وہ لگ بھگ 460 منٹ تک کریز پر رہے اور302 منٹ میں 141 رن بناکر یاسر شاہ کی بال پر ایل بی ڈبلیو آوٹ قرار دیے گئے۔ اسی اننگز میں وہ ایک مرتبہ ایل بی ڈبلیو ہونے سے بچ گئے تھے کیو نکہ امپائر نے انہیں آؤٹ قرار نہیں دیا تھا اور پاکستانی کپتان سرفراز احمد نے ریویو نہیں مانگا تھا۔ پہلی اننگز میں بھی انہوں نے شاندار بلے بازی کو مظاہرہ کرتے ہوئے175 بالوں پرآٹھ چوکوں کی مدد سے 85 رن بنائے تھے۔اسلام آباد میں18 دسمبر1986 کو پیدا ہوئے عثمان خواجہ نے پاکستان کے خلاف چوتھے ٹیسٹ کی ساتویں اننگز میں انہوں نے پہلی سنچری اسکور کی اس سے پہلے انکا پاکستان کے خلاف سب سے بڑا اسکور229 منٹ میں165 بالوں پر13 چوکوں کی مدد97 تھا جو انہوں نے ملبورن میں2016-17 میں بنایاتھا۔دائیں ہاتھ سے بلے بازی کرنے والے عثمان خواجہ کی آسڑیلیا سے باہر یہ دوسری سنچری تھی۔ اس سے پہلے انہوں نے نیوزی لینڈ کے خلاف ولنگٹن2015-16 میں347 منٹ میں216 بالوں پر25 چوکوں کی مد د سے140 رن بنائے تھے۔عثمان خواجہ کاٹیسٹ کرکٹ میں سب سے بڑا اسکور174 ہے جو انہوں نے نیوزی لینڈ کے خلاف برسبین میں2015-16 میں 374 منٹ میں239 بالوں پر16 چوکوں اور دو چھکوں کی مدد سے بنایا تھا۔چوتھی اننگ میں سنچری بنانا آسان نہیں ہوتا ۔ عثمان خواجہ نے پہلی مرتبہ ٹیسٹ کی چوتھی اننگ میں سنچری اسکور کی ہے۔ اس سے پہلے انہوں نے تین سنچریاں پہلی اننگ میں اور تین ہی سنچریاں دوسری اننگ میں اسکور کی تھیں۔عثمان خواجہ پاکستان کے خلاف سنچری بنانے والے آسڑیلیا کے39 ویں کھلاڑی ہیں۔ آسڑیلیا کے لئے ابھی تک پاکستان کے خلاف76 سنچریاں بنی ہیں جس میں ایک ٹریپل اور پانچ ڈبل سنچریاں بھی شامل ہیں۔ متحدہ عرب امارات میںآسڑیلیا کے صرف پانچ کھلاڑیوں نے سنچریاں اسکور کی ہیں۔ عثمان خواجہ سے پہلے ایسا رکی پونٹنگ، ڈیوڈ وارنر، متھیو ہیڈن اوراسٹیو وا نے کیا تھا۔عثمان خواجہ کا اسکور آسڑیلیا کے لئے پاکستان کے خلاف متحدہ عرب امارات کے خلاف سب سے بڑا اسکور ہے۔ اس سے پہلے یہ ریکارڈ رکی پونٹنگ کے پاس تھا جنہوں نے شارجہ میں2002-03 میں395 منٹ میں266 بالوں پر 14چوکوں اور تین چھکوں کی مدد سے 150 رن بنائے تھے۔ اس ٹیسٹ میں آسڑیلیا نے ایک اننگز اور20 رن سے کامیابی حاصل کی تھی۔عثمان خواجہ نے اپنی اننگز کے دوران302گیندیں کھیلی ۔ یہ پانچواں موقع تھا جب میچ کی چوتھی اننگز میں آسڑیلیا کے کسی کھلاڑی نے تین سو یا اس سے زیادہ گیندیں کھیلیں۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ

جواب چھوڑ دیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.