ایچ ڈی اے شدید انتظا می اور مالیاتی بحران میں مبتلا ہوچکا ہے

41

حیدر آباد (نمائندہ جسارت) ایچ ڈ ی اے ایمپلا ئز یو نین کی جا نب سے واسا ملازمین کی چار ما ہ کی تنخواہیں، پنشن اور دیگر واجبات کی ادائیگی کے لیے دسویں روز بھی پر یس کلب حیدرآباد کے سامنے احتجاجی دھر نا جاری رہا جس میں ایچ ڈ ی اے ملازمین کی بڑ ی تعداد نے شرکت کی اور ایچ ڈی اے انتظامیہ سمیت سی بی اے یونین کے خلاف سخت نعرے بازی کی۔ اس موقع پر ایچ ڈ ی اے ایمپلائز یونین کے رہنماؤں اعجاز حسین، راجا خان پالاری، رحیم کھوسو، بلاول ملاح، عبدالقیوم بھٹی اور دیگر رہنماؤں نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ ایچ ڈی اے انتظامیہ عیاشیاں کررہی ہے جبکہ غریب ملازمین اور اْن کے بچے دو وقت کی روٹی کو بھی ترس رہے ہیں جبکہ حکومت سندھ نے ایچ ڈی اے واسا کے ملازمین کی تنخواہوں اور پنشن کی ادائیگی کے لیے پانچ کروڑ روپے کی رقم ادا کرنے کا حکم جاری کیا ہے لیکن یہ رقم نا کافی ہے۔ ایچ ڈی اے کا ادارہ حکومت سندھ کی عدم دلچسپی کی وجہ سے شدید انتظا می اور مالیاتی بحران میں مبتلا ہوچکا ہے۔ لہٰذا ہم وزیر اعلیٰ سندھ اور وزیر بلدیات سے مطالبہ کرتے ہیں کہ وہ ایچ ڈی اے شعبہ واسا کے ملازمین کی تنخواہ اور پنشن سمیت دیگر واجبات کی ادائیگی جلد سے جلد کروائیں۔ بصورت دیگر احتجاج کا دائرہ وسیع کیا جائے گا۔
حیدر آباد (نمائندہ جسارت) سندھ نیشنل تحریک کے سربراہ اشرف نوناری نے کہا ہے کہ ایک طرف چیف جسٹس اپنے ریمارکس میں کہہ رہے ہیں کہ ملک ریاض نے سندھ حکومت سے بحریہ ٹاؤن کی زمین دھوکے بازی سے لی ہے، ملک ریاض نے چاندی دے کر سونا خرید لیا ہے، اس بیان کے بعد بھی سندھ کی کھربوں اور اربوں روپے کی زمین کے بدلے صرف 15 سو ارب روپے جرمانے کے طور پر سندھو دریا پر بننے والے سندھ دشمن ڈیمز فنڈ کے لیے مانگنا سندھ کے وسائل پر ڈاکا ڈالنے کے مترادف ہے، جس کو سندھ کے عوام کسی بھی صورت قبول نہیں کرے گی۔ ملک میں دو قانون ہیں لاہور میں بحریہ ٹاؤن کی غیر قانونی تعمیر پلازہ توڑ کر ملکیت پنجاب حکومت کو دے رہے ہیں، جبکہ سندھ میں غیر قانونی تعمیر کھربوں روپے کی ملکیت میں سے ڈیم فنڈ کے لیے 15 سو ارب لے کر ان کو جائز قرار دیا جارہا ہے۔ سندھ میں بحریہ ٹاؤن، اومنی گروپ ودیگر کمپنیوں کی صورت میں لٹیرے سندھ کے وسائل کو بے دردی سے لوٹ رہے ہیں، تو دوسری طرف چیف جسٹس بجائے ان سے سندھ کی لوٹی ہوئی دولت اور زمین واپس لینے کے ان سے پلے بارگیننگ کے ذریعے ڈیم فنڈ لے رہے ہیں جو آئین وقانون کے خلاف ہے۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ

جواب چھوڑ دیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.