میڈیا ہاؤسز سے ملازمین کی جبری برطرفی قابل مذمت ہے

48

شکارپور (نمائندہ جسارت) میڈیا ورکرز کی جبری برطرفیوں، غیر اعلانیہ سنسر شپ اور اشتہارات کی بندش کیخلاف پاکستان فیڈرل یونین آف جرنلسٹس کی مرکزی کال پر شکارپور یونین آف جرنلسٹس کی جانب سے آغا اسرار پٹھان کی قیادت میں شکارپور پریس کلب سے احتجاجی ریلی نکال کر جمانی ہال چوک کے قریب دھرنا دیا گیا، جس میں ڈسٹرکٹ بھر کے صحافیوں،وکلا برادری، سیاسی، سماجی مذہبی اور مختلف طبقہ فکر کے رہنماؤں نے بڑی تعداد میں شرکت کی۔ اس موقع پر شکارپور یونین آف جرنلسٹس کے صدر آغا اسرار پٹھان، جنرل سیکرٹری رحیم بخش جمالی، شکارپور پریس کلب کے صدر عبدالسلام انڑ، جنرل سیکرٹری ایاز منگی، ڈسٹرکٹ بار ایسوسی ایشن کے صدر ایڈووکیٹ انور شیخ، ایڈووکیٹ محمد اعظم بروہی، ایڈووکیٹ نذیر حسین بھیو، شکارپور بچاؤ تحریک کے چیئرمین میاں ظفر علوی، شکارپور اسمال ٹریڈرز کے عبدالرزاق برڑو، ایس ٹی پی رہنما احسان جیہو، پاکستان سنی تحریک کے حبیب احمد قادری، کلرک ایسوسی ایشن کے عبدالوہاب کاغذی، مسلم لیگ ن کے دوست محمد چانڈیو، پیپلز پارٹی ش ب کے سعید سومرو، قومی عوامی تحریک کے میاں ظفر چنا، زاہد نون، رحمت اللہ سومرو، سوڈو جیمس، سلطان رند اور دیگر نے خطاب کرتے ہوئے کہا کہ میڈیا ہاؤسز سے ملازمین کی جبری برطرفی قابل مذمت اور تشویشناک اقدام ہے۔ ملازمتوں سے نکال کر ظلم کیا جارہا ہے، فوری طور پر جبری برطرفیاں ختم کرکے میڈیا ورکرز کو تنخواہیں ادا کی جائیں، صحافیوں کے معاشی قتل عام کی اجازت نہیں دی جائے گی، حکومت اخبارات کے اشتہارات کی بندش کے ذریعے میڈیا کو کنٹرول کرنا چاہتی ہے۔ رہنماؤں نے مطالبہ کیا کہ میڈیا ورکروں کی جبری برطرفیوں، تنخواہوں کی عدم ادائیگی، اشتہارات کی بندش، الیکٹرونک اور پرنٹ میڈیا کی سنسر شپ کے فیصلے فوری طور پر واپس لیے جائیں اور ویج بورڈ پر عمل کیا جائے۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ

جواب چھوڑ دیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.