امریکا کا شام کی تعمیر نو میں مدد کرنے سے انکار 

61

واشنگٹن (انٹرنیشنل ڈیسک) امریکی وزیر خارجہ مائیک پومپیو نے خبردار کیا ہے کہ جب تک شام میں ایرانی فورسز موجود ہیں امریکا شام کی تعمیر نو میں کسی قسم کی مدد نہیں کرسکتا۔ عرب ٹی وی کے مطابق گزشتہ روز ایک پریس کانفرنس سے خطاب میں مائیک پومپیو نے کہا کہ شام کی تعمیر نو میں اس وقت ہم کوئی مدد نہیں کر سکتے جب تک ایرانی ملیشیائیں اور فورسز شام میں موجود ہیں۔ پہلے ایرانی فورسز کو شام سے نکلنا ہوگا، اس کے بعد شام کی تعمیر نو کے بارے میں کچھ سوچیں گے۔ ایرانی فورسز کے شام سے مکمل طور پر نکل جانے کے بعد ہی امریکا شام میں تعمیر نو میں مالی مدد فراہم کرسکتا ہے۔انہوں نے مزید کہا کہ ایران کو شام سے مکمل
طورپر نکل جانے کی ضمانت دینا ہوگی، ورنہ ہم شام کی تعمیر نو کے لیے ایک ڈالر بھی صرف نہیں کریں گے۔ وزیرخارجہ کا کہنا تھا کہ صدر ڈونلڈ ٹرمپ شام میں جاری تنازع کا پرامن سیاسی حل چاہتے ہیں۔ شام کے حوالے سے ہمارے مطالبات میں پہلا مطالبہ ایرانی فورسز کا شام سے انخلا ہے۔ اُدھر ترک صدر رجب طیب اِردوان نے کہا ہے کہ شام کے شمالی شہر منبج کے بارے میں امریکا اور ترکی کے درمیان طے پانے والے معاہدے میں تاخیر ہوئی ہے مگر وہ مکمل طور پر ختم نہیں ہوا۔ ترک اخبار حریت کے مطابق اِردوان نے یہ بات ہنگری کے دورے سے واپسی پر دوران پرواز کہی۔ امریکی پادری اینڈریو برونسن کے خلاف ترکی میں مقدمے کے حوالے سے پوچھے گئے سوال کے جواب میں اِردوان کا کہنا تھا کہ وہ عدالتی معاملات میں دخل نہیں دے سکتے کیونکہ ترکی قانون کی بالادستی کی حامل ریاست ہے۔
امریکا ؍ شام

Print Friendly, PDF & Email
حصہ

جواب چھوڑ دیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.