اہم خبریں

109

4مالیاتی اداروں کے سربراہ عہدوں پر بحال ،فواد چودھری کا اظہار تشویش
اسلام آباد( آن لائن)اسد عمر کی سربراہی میں وزارت خزانہ نے 5 مالیاتی اداروں کے سربراہان کو عہدوں سے ہٹانے کے بارے میں وفاقی کابینہ کے فیصلوں کو ردی کی ٹوکری میں ڈال دیا۔حکومت کے ترجمان فواد چودھری نے تشویش ظاہر کرتے ہوئے کہا ہے کہ اسحاق ڈار کے لگائے گئے مالیاتی اداروں کے سربراہوں کو جلد فارغ کردیا جائے گا۔آن لائن کو ملنے والی معلومات کے مطابق 4 اہم مالیاتی اداروں کے سربراہوں کو وفاقی کابینہ کے فیصلے کے تحت ہٹانے کے نوٹسز جاری کرنے کے بعد واپس عہدوں پر بحال کردیاگیا ہے،زرعی ترقیاتی بینک کے سربراہ سید طلعت محمود،ایس ایم ای بینک کے سربراہ احسان الحق خان،فرسٹ ویمن بینک کی سربراہ طاہرہ رضا اور ایچ بی ایف سی کے سربراہ باسط صالح کو انکے عہدوں پر واپس بحال کردیاگیا ہے۔ذرائع کا دعویٰ ہے کہ اس حوالے سے باضابطہ خفیہ طور پر نوٹیفکیشن جاری کیے گئے ہیں۔ایچ بی ایف سی کے سربراہ باسط صالح کو سابق صدر پرویز مشرف کے قریبی ساتھی عشرت العباد کی سفارش پر بحال کیا گیا ہے۔

سعد رفیق اور سلمان رفیق کی حفاظتی ضمانت کی درخواستیں مسترد
اسلام آباد (مانیٹرنگ ڈیسک) اسلام آباد ہائی کورٹ نے سابق وزیر ریلوے سعد رفیق اور ان کے بھائی سلمان رفیق کی حفاظتی ضمانت کی درخواستیں مسترد کردیں۔ جسٹس عامر فاروق اور جسٹس محسن اختر کیانی نے سعد رفیق کی درخواست پر سماعت کی۔خواجہ سعد رفیق کے وکیل کامران مرتضیٰ نے اپنے دلائل میں کہا کہ نیب کی طرف سے کال اپ نوٹس جاری کیے گئے ہیں، ہم نے 15 دن کی حفاظتی ضمانت کے لیے استدعا کی ہے۔ عدالت نے ریمارکس دیے کہ لاہور ہائیکورٹ پنڈی بینچ یہاں سے 45 منٹ کی دوری پر ہے، حفاظتی ضمانت کے لیے وہاں سے رجوع کیوں نہیں کیا؟۔ اس پر سعد رفیق کے وکیل نے مؤقف اپنایا کہ بڑی مشکل سے یہاں تک پہنچے ہیں، وہاں گئے تو گرفتار کرلیں گے۔جسٹس عامر فاروق نے ریمارکس دیے کہ کل لاہور میں پریس کانفرنس کرکے یہ یہاں پہنچ گئے، آپ کو سائیکل پر جانا ہے جو اتنے دن مانگ رہے ہیں۔سعد رفیق کے وکیل نے کہا کہ کل لاہور سے اسلام آباد پہنچنے پر کال اپ نوٹس جاری ہونے کا معلوم ہوا۔عدالت نے خواجہ سعد رفیق کے وکیل کے دلائل سننے کے بعد فیصلہ محفوظ کرلیا جو تھوڑی دیر بعد سناتے ہوئے سعد رفیق کی درخواست مسترد کردی۔ عدالت نے درخواست گزار کو متعلقہ فورم لاہور ہائیکورٹ سے رجوع کرنے کا حکم دیا ہے۔سابق وزیر اور ن لیگ کے رہنما خواجہ سعد رفیق فیصلہ آنے سے قبل ہی عدالت سے چلے گئے۔واضح رہے کہ نیب خواجہ سعد رفیق اور سلمان رفیق کیخلاف پیراگون ہاؤسنگ سوسائٹی سے متعلق تحقیقات کررہا ہے اور انہیں اس حوالے سے کئی بار طلب کرکے پوچھ گچھ بھی کی گئی ہے۔

وزیراعظم کی سعودی عرب کو تیل کے شعبے میں سرمایہ کاری کی پیشکش
اسلام آباد (آن لائن) وزیراعظم عمران خان نے کہا ہے کہ ملک میں پیٹرولیم کے شعبے میں سرمایہ کاری کے بے پناہ مواقع موجود ہیں، اس ضمن میں سعودی عرب کو سرمایہ کاری کی پیشکش کردی۔ ان خیالات کا اظہار انہوں نے وفاقی وزیر پیٹرولیم غلام سرور سے ملاقات کے دوران گفتگوکرتے ہوئے کیا۔ وزیر پیٹرولیم نے وزیراعظم کو سعودی عرب سمیت دیگر ممالک کیساتھ سرمایہ کاری سے متعلق اقدامات سے آگاہ کیا ۔ اس موقع پر وزیراعظم کا کہنا تھا کہ پاکستان میں پیٹرولیم کے شعبے میں سرمایہ کاری کے وسیع مواقع موجودہیں اور سعودی عرب کوڈرلنگ کے شعبے میں سرمایہ کاری کی پیش کش کی ہے جبکہ تیل کی تلاش میں سعودی عرب نے دلچسپی کا اظہار کیا ہے۔ انہوں نے کہاکہ حکومت بیرونی سرمایہ کاروں کو بہترین ماحول فراہم کررہی ہے وہ آئیں اور پاکستان میں سرمایہ کاری کریں ۔وزیراعظم نے ہدایت کی کہ سعودی عرب سمیت دیگر ممالک جو پاکستان میں سرمایہ کاری کرنا چاہتے ہیں ان ہر ممکن سہولیات فراہم کی جائیں تاکہ ملکی معیشت کو مضبوط و مستحکم کیا جاسکے۔

نئی حکومت کی تشکیل سے 100روزتک وفاقی کابینہ کے اراکین کی چھٹی بند
اسلام آباد(اے پی پی) وفاقی حکومت نے نئی حکومت کی تشکیل سے 100روزتک وفاقی کابینہ کے اراکین کو چھٹی سے روک دیا ہے ،تمام اراکین وفاقی کابینہ کے ہر اجلاس میں شرکت یقینی بنائیں گے ۔کابینہ ڈویژن کی جانب سے ’’پراگرس آن 100ڈیز ایجنڈے‘‘کے عنوان سے جاری مراسلے میں کہا گیا ہے کہ ، بغیر کسی ٹھوس وجہ کے اراکین وفاقی کابینہ کے ہر اجلاس میں شرکت یقینی بنائیں گے ، پہلے 100روز غیر ملکی دورے سے گریز کریں۔

وزیراعظم کا او پی ایف میں کرپشن و جعلی ڈگری کے مقدمات نیب کو بھجوانے کا حکم
اسلام آباد (آن لائن) وزیراعظم عمران خان نے وزارت اوورسیز کے ذیلی ادارے او پی ایف میں ہونے والی اربوں روپے کی کرپشن، جعلی ڈگری ہولڈرز اور ان کے سہولت کاروں کیخلاف مقدمات نیب کو بھجوانے کا حکم دیدیا، قانون نافذ کرنیوالے اداروں نے وزیراعظم کے احکامات کے بعد موجودہ و سابق منیجنگ ڈائریکٹرز سے متعلق 10 سال پرانا ریکارڈ اکٹھا کرنا شروع کردیا جبکہ او پی ایف سے 100سے زائد سابق و موجودہ افسران کی گرفتاریوں کا امکان ہے۔ ذرائع کے مطابق وزیراعظم کے معاون خصوصی ذوالفقار بخاری کا امتحان شروع ہو گیا ہے، گزشتہ روز اوورسیز پاکستانیز پر وزیراعظم کے معاون خصوصی ذوالفقار بخاری اور وزارت اوورسیز کے سیکرٹری نے وزیراعظم عمران خان کو وزارت سمیت دیگر ذیلی اداروں سے متعلق بریفنگ میں بتایا کہ او پی ایف میں سابق ادوار میں بے تحاشہ کرپشن کرکے ادارے کو نقصان پہنچایا گیا اور اس حوالے سے بین الاقوامی سطح پر پاکستانی شہریوں کے پیسے کے ضائع سمیت ان کے اعتماد کو بھی ٹھیس پہنچائی گئی۔ سیکرٹری وزارت آصف شیخ نے بریفنگ دیتے ہوئے کہا کہ وہ پہلے بھی وزارت میں رہ چکے ہیں اور وہ بہتر جانتے ہیں کہ کون صحیح طریقے سے کام کررہا ہے ، اوپی ایف ایک واحد ذیلی ادارہ ہے جس میں اقرباء پروری ، کرپشن اور دیگر خبریں موصول ہوتی رہتی ہیں اس پر وزیراعظم کا کہنا تھا کہ خبریں ہی نہیں بہت کچھ حقائق پر مبنی دستاویزات بھی موجود ہیں، جعلی ڈگری ہولڈرز افسران و اسٹاف سمیت سابق ادوار میں ہونے والی کرپشن کا اسپیشل آڈٹ کروا کر ان کے مقدمات نیب کو بھجوائے جائیں اور ان کے سہولت کاروں کیخلاف سنگین نوعیت کے مقدمات درج کرکے فارغ کیا جائے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ او پی ایف میں کرپٹ افسران نے اپنے آپ کو بچانے کے لیے ذوالفقاربخاری سے رابطے بڑھانا شروع کردیے ہیں ۔دوسری جانب وزیراعظم سیکرٹریٹ ذرائع کا کہنا ہے کہ ذوالفقار بخاری کو وزیراعظم کی جانب سے پہلا ٹاسک دیا گیا اور اگر وہ غیر جانبدارانہ طریقے سے اس پر پورا اترنے ہیں ان کیخلاف اپوزیشن ودیگر افراد کی ہرزہ سرائی کابھرپور انداز میں دفاع کیا جائے گا اگر وہ کرپشن ، اقربا پروی اور جعلی ڈگری ہولڈرز کے مقدمات میں اپنی طاقت اور اثرو رسوخ استعمال کرکے کسی کو رعایت دیتے ہیں تو حکومتی سطح پر ان کا دفاع نہیں کیا جائے گا۔

شہباز شریف کی گرفتاری اور ریمانڈ لاہور ہائیکورٹ میں چیلنج
لاہور (نمائندہ جسارت) قومی اسمبلی میں قائد حزب اختلاف و سابق وزیر اعلیٰ پنجاب محمد شہباز شریف کی گرفتاری اور احتساب عدالت کے ریمانڈ کو لاہور ہائیکورٹ میں چیلنج کردیا گیا۔درخواست حافظ مشتاق نعیمی نے ایڈووکیٹ ذوالفقار احمد بھلہ کی وساطت سے دائر کی جس میں وفاقی حکومت اور چیئرمین نیب کو فریق بنایا گیا ہے۔ درخواست میں کہا گیا ہے کہ پاکستانی آئین کے آرٹیکل 248 کے مطابق وزیراعظم اور وزیر اعلیٰ کو استثنا حاصل ہے، پاکستان کا آئین وزیراعظم اور وزیر اعلیٰ کو مکمل تحفظ فراہم کرتا ہے، قانون کے مطابق پبلک آفس ہولڈر کے ایکٹ کو چیلنج کیا جاسکتاہے، آئین کے آرٹیکل 248 کے مطابق پبلک آفس ہولڈر کو گرفتار نہیں کرسکتے ہیں۔ لہٰذا معزز عدالت سے استدعا ہے کہ شہباز شریف کی گرفتاری اور ریمانڈ کو کالعدم قرار دیا جائے ۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ

جواب چھوڑ دیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.