عمران خان حریت قیادت کی مشاورت سے کشمیر پالیسی بنائیں، لیاقت بلوچ

38

لاہور(نمائندہ جسارت)جماعت اسلامی پاکستان اور متحدہ مجلس عمل کے سیکرٹری جنرل لیاقت بلوچ نے کہا ہے کہ 27 اکتوبر کوجموں و کشمیر پر بھارت کے ناجائز قبضے کے خلاف عالمی ضمیر کو جھنجھوڑنے کے لیے اسلا م آباد میں کشمیر مارچ کیا جائے گا ۔ وزیراعظم عمران خان حریت اور کشمیری قیادت سے مشاورت سے کشمیر پر جامع پالیسی تشکیل دیں ۔ بھارت کے جموں و کشمیر کے عوام پر مظالم اور بھارتی نام نہاد جعلی جمہوری عمل کو بے نقاب کرنے کے لیے ٹھوس سفارتی دباؤ بڑھایا جائے ۔ او آئی سی کا اجلاس صرف مسئلہ کشمیر پر بلایا جائے جیسا کہ حال ہی میں ایسا اجلاس صرف مسئلہ فلسطین پر ہواہے ۔ وزیرخارجہ اقوام متحدہ میں تقریر کے بعد اہم ترین سفارتی اقدامات بھی کریں ۔ اپنے ایک بیان میں لیا قت بلوچ نے کہا کہ آسیہ ملعونہ کے مقدمے ، سزا اور سابق گورنر پنجاب سلمان تاثیر کے توہین رسالت پر مبنی تبصرے اور اقدامات کی وجہ سے ممتاز قادر ی کے ہاتھوں واقعہ ہوا اس لیے کہ اس وقت کی حکومت نے عدم حکمت اور بے حسی کا مظاہرہ کرتے ہوئے آسیہ ملعونہ کی سزا پر عملدرآمد روک دیا اب معاملہ پھر عدالت عظمیٰ میں ہے ۔ ناموس رسالتؐ کے تحفظ کے لیے مسلمان ایمانی جذبات رکھتے ہیں ۔ کسی مسلم یا غیر مسلم کو شعائر اسلام اور ناموس مصطفےٰؐ پر حملے اور توہین آمیز اقدامات کی اجازت نہیں ۔ پورے ملک میں از سر نو مظاہرے شروع ہورہے ہیں توقع ہے کہ حساس ترین مقدمے میں عدلیہ دینی جذبات کو ضرور پیش نظر رکھے گی اور عالمی استعماری قوتوں اور سیکولر این جی اوز کے دباؤ کے بجائے اسلامی نظریاتی جمہوری ملک کی عدلیہ قرآن و سنت کے اصول کی بنیاد پر فیصلہ کرے گی ۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ