پینتیس ارب روپے کے بے نامی اکاؤنٹس کی بھرمار تشویشناک ہے،امیرالعظیم

37

لاہور (وقائع نگارخصوصی) امیر جماعت اسلامی صوبہ وسطی پنجاب امیر العظیم نے 35 ارب روپے کے بے نام اکاؤنٹس کی نشاندہی پر تشویش کا اظہارکرتے ہوئے کہاہے کہ کرپٹ عناصر بینک افسروں کی ملی بھگت سے کالے دھن کو چھپانے کے لیے کروڑوں روپے عام افراد کے اکاؤنٹس میں منتقل کررہے ہیں،اس حوالے سے آئے روزکوئی نہ کوئی چونکا دینے والی خبر میڈیا میں آرہی ہے۔یہ ایک انتہائی مضبوط مافیا ہے جس کے خلاف سنجیدہ بنیادوں پر اقدامات کرنے ہوں گے۔انہوں نے کہاکہ ملک میں کرپشن کی انتہاہوچکی ہے۔روزانہ12ارب روپے کی کرپشن لمحہ فکر ہے۔ ملک وقوم کو لوٹنے والوں کیخلاف کارروائی کرکے ان کومنطقی انجام تک پہنچایا جانا چاہیے۔ اگر موجودہ حکومت بدعنوان افراد کا قلع قمع کرتے ہوئے کرپشن کو مکمل طورپر روک لے توملک میں خوشحالی آسکتی ہے۔انہوں نے کہاکہ بدقسمتی سے انسداد کرپشن کے اداروں کے اندر بھی کرپٹ عناصر موجود ہیں اور وہی قانونی کمزوریوں کافائدہ اٹھاتے ہوئے مجرمان کو فرار کی راہ دکھاتے ہیں۔ایسی کالی بھیڑوں کو بھی گرفت میں لانا ہوگا۔انہوں نے کہاکہ ملک وقوم اس وقت مختلف چیلنجزکاسامنا کررہے ہیں۔اوپر سے لے کر نیچے تک رشوت خوری کابازار گرم ہے۔عوام کو اپنے جائز کام کروانے کے لیے بھی رشوت دینی پڑتی ہے۔کرپٹ افسران کی لوٹ مار کی وجہ سے سرکاری اداروں کا بہت ہی براحال ہے۔عوام کو تنگ کرنے اور رشوت لینے کے لیے چندگھنٹوں کے کام پر کئی کئی دن اور ہفتے لگا دیے جاتے ہیں، ان پر چیک اینڈ بیلنس کاکوئی سسٹم موجود نہیں۔ انہوں نے کہاکہ وزیر اعظم عمران خان قوم سے کیے گئے اپنے وعدوں کی تکمیل کریں۔ ان کے پاس اب حکومت بھی ہے اور اختیارات بھی۔ حکومتی وزرا اپنی کارکردگی کو موثر بنائیں تب ہی جاکر سسٹم میں بہتری آئے گی۔ انہوں نے کہا کہ تحریک انصاف کی حکومت کواب تقریباً دوماہ ہوچکے ہیں مگر عوامی توقعات ابھی تک پوری نہیں ہوسکیں بلکہ اس کے برعکس لوگوں کی مشکلات میں اضافہ ہوتا جارہا ہے۔ امیر العظیم نے مزیدکہاکہ وزیراعظم عمران خان نے 2018ء کے الیکشن سے قبل قوم سے وعدہ کیا تھا کہ وہ ملک میں حقیقی تبدیلی لائیں گے اور غریب عوام کوریلیف فراہم کیا جائے گا، مگر گزشتہ دو ماہ میں ٹیکسوں کی بھرمار،مہنگائی اور غربت کے سوا عوام کو کچھ نہیں ملا۔
نوابشاہ، پاکستان نیوی بھرتی مرکز کا اعلامیہ
نواب شاہ (نمائندہ جسارت) کمانڈر پاکستان نیوی بھرتی مرکز شہید بینظیر آباد ظفر اقبال نے ایک اعلامیہ میں بتایا ہے کہ پاکستان نیوی میں بطور فی میل سٹیورڈ (سیلر)(C۔2018)بیچ کی رجسٹریشن شروع ہے جو 17 اکتوبر تک جاری رہے گی۔اعلامیہ میں مزید بتایا گیا ہے کہ برانچ فی میل سٹیورڈ کے لئے غیر شادی شدہ پاکستانی خواتین شہری جن کی عمر 16 سے 20 سال (یکم مارچ 2019 تک) قد 5 فٹ ، تعلیمی قابلیت میٹرک (سائنس/آرٹ ) ہو ان تمام خواہشمند خواتین کو مشورہ دیا گیا ہے کہ وہ اپنی رجسٹریشن کے لیے پاک نیوی کے قریبی بھرتی مرکز پر تشریف لائیں یا آن لائن رجسٹریشن کے لیے پاک نیوی کی ویب سائٹ www.paknavy.gov.pk وزٹ کریں یا مزید معلومات کے لیے 02449370123 پر رابطہ کریں۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ

جواب چھوڑ دیں

This site uses Akismet to reduce spam. Learn how your comment data is processed.