میرپورخاص،تنخواہ کی عدم ادائیگی پر لیڈی ہیلتھ ورکرزکا احتجاج

39

میرپورخاص (نمائندہ جسارت) تنخواہوں کی عدم ادائیگی کے خلاف لیڈی ہیلتھ ورکرز کا پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ اور خالی برتن رکھ کر دھرنا دیا گیا۔ تنخواہوں کی عدم ادائیگی کی صورت میں خسرہ مہم کے بائیکاٹ کا اعلان کردیا۔ لیڈی ہیلتھ ورکرز نے پانچ ماہ سے تنخواہوں کی ادائیگی نہ ہونے کیخلاف میرپورخاص پریس کلب کے سامنے احتجاجی مظاہرہ کیا اور خالی برتن رکھ کر دھرنا دیا۔ اس موقع پر مظاہرین سے خطاب کرتے ہوئے لیڈی ہیلتھ ورکرز سندھ کی صدر حلیمہ لغاری، کشور سلطانہ، رحمت، ارشد علی اور دیگر نے کہا کہ سندھ کے تمام اضلاع کی لیڈی ہیلتھ ورکرز کو تنخواہوں کی ادائیگی ہوچکی ہے لیکن میرپورخاص کی 9 سو سے زائد لیڈی ہیلتھ ورکرز، سپر وائزر اور ڈرائیوروں کو گزشتہ پانچ ماہ سے تنخواہیں ادا نہیں کی جارہی ہیں اور مختلف حلیوں اور بہانوں سے تنگ کیا جارہا ہے جبکہ گاڑیوں کی مرمت اور پیٹرول کے لیے بھی اخراجات فراہم نہیں کیے جارہے ہیں۔ انہوں نے کہا کہ ہمارے گھروں کے چولہے ٹھنڈے پڑچکے ہیں، اس لیے آج ہم خالی برتنوں کے ساتھ احتجاج کررہے ہیں۔ انہوں نے حکومت سندھ سے مطالبہ کیا ہے کہ فوری طور پر تنخواہیں ادا کی جائیں اگر ہمیں تنخواہیں جلد ادا نہ کی گئیں تو 15 اکتوبر سے شروع ہونے والی خسرہ مہم کا بائیکاٹ کریں گے۔ بعد ازاں مظاہرین نے پی پی ایچ آئی کے دفتر کے سامنے مرکزی شاہراہ میرپورخاص حیدرآباد روڈ پر دھرنا دیا۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ