موجودہ حکومت ہی ملک کو معاشی دلدل سے نکالی گی ، وزیر اعظم

106
اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان 109ویں نیشنل مینجمنٹ کورس کے شرکا سے خطاب کررہے ہیں
اسلام آباد: وزیراعظم عمران خان 109ویں نیشنل مینجمنٹ کورس کے شرکا سے خطاب کررہے ہیں

اسلام آباد (نمائندہ جسارت+ خبر ایجنسیاں+ مانیٹرنگ ڈیسک) وزیر اعظم عمران خان نے کہا ہے کہ عوام کو ریلیف دینا چاہتے ہیں اور یہ واحد حکومت ہوگی جو معیشت کو دلدل سے نکالے گی۔ چیلنجز ماضی کی حکومتوں سے کہیں سے زیادہ ہیں اور چیلنجز سے نمٹنے کے لیے مشکل فیصلے کرنے پڑ رہے ہیں۔ان خیالات کا اظہار وزیر اعظم عمران خان نے اعلیٰ سطحی مشاورتی اجلاس سے خطاب،نیشنل اسکول آپ پبلک پالیسی میں تقریب ،وزیراعظم آزاد کشمیر راجا فاروق حیدر،فیصل واوڈا اورملک کے مختلف گرجا گھروں کے بشپس سے ملاقات کے دوران کیا۔تفصیلات کے مطابق وزیراعظم عمران خان کی زیرصدارت اعلیٰ سطح کا مشاورتی اجلاس ہوا جس میں وفاقی وزرا، پارٹی رہنماں اور معاشی ماہرین نے شرکت کی۔ اجلاس میں حکومت کو درپیش معاشی چیلنجز کی نئی حکمت عملی پر غور کیا گیا۔ذرائع کا کہنا ہے کہ وزیر اعظم نے اجلاس کو آئی ایم ایف سے رجوع کرنے کی وجوہات بتائیں اور معاشی پالیسیوں کے حوالے سے آگاہ کیا۔ وزیر اعظم نے پارٹی رہنماؤں کو حکومتی مؤ قف کے دفاع کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ حکومتی مؤقف درست انداز میں میڈیا اور عوام کے سامنے پیش کیا جائے۔ذرائع کا بتانا ہے کہ وزیراعظم عمران خان نے معاشی حکمت عملی پر عوام کو تمام پہلوں پر اعتماد میں لینے کی ہدایت کرتے ہوئے کہا کہ سابق حکومت کی غلط پالیسیوں کے منفی نتائج سے عوام کو آگاہ کیا جائے۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ اجلاس میں نئی معاشی پالیسی اور حکمت عملی پر پارلیمنٹ کو بھی اعتماد میں لینے کا فیصلہ کیا گیا۔ وزیر اعظم نے اجلاس میں حکومتی میڈیا ٹیم کی غیر مؤثر کارکردگی پر ناپسندیدگی کا اظہار بھی کیا۔ وزیراعظم عمران خان کا کہنا تھا کہ نئی حکومت کے چیلنجز ماضی کی حکومتوں سے کہیں سے زیادہ ہیں اور چیلنجز سے نمٹنے کے لیے مشکل فیصلے کرنے پڑ رہے ہیں۔ ذرائع کا کہنا ہے کہ وزیراعظم نے خود بھی ہر فورم پر حکومتی معاشی اصلاحات پر نکتہ نظر دینے کا فیصلہ کیا ہے۔علاوہ ازیں نیشنل اسکول آف پبلک پالیسی کے 109ویں نیشنل مینجمنٹ کورس سے خطاب کرتے وزیراعظم نے کہا کہ ریاست کی ریڑھ کی ہڈی کی حیثیت سے بیورو کریسی پر قوم کی توقعات پر پورا اترنے کے لیے بھاری ذمے داری عاید ہوتی ہے، انسانی سرمایہ، معدنیاتی دولت، تزویراتی محل وقوع اور دیگر وسائل سمیت ملک میں پائی جانے والی صلاحیت کو اجاگر کرتے ہوئے وزیراعظم نے دستیاب وسائل کے بہتر انتظام، خدمات کی فراہمی کو بہتر بنانے اور اپنی بہترین صلاحیتوں کو بروئے کار لاتے ہوئے قوم کی خدمت کے جذبہ اور عزم کی ضرورت پر زور دیا۔ مزید برآں عمران خان سے آزادجموں وکشمیر کے وزیراعظم راجا محمد فاروق حیدر خان نے ملاقات کی۔ دونوں رہنماؤں نے آزاد کشمیر سے متعلق امور پر تبادلہ خیال کیا۔ وزیراعظم آزادکشمیر نے درپیش امور پر تفصیلی بریفنگ دی۔ راجا فاروق حیدر خان نے نیلم جہلم منصوبے کے عوامل، منگلا ڈیم اپ ریزنگ متاثرین ، ترقیاتی بجٹ،کوہالہ پروجیکٹ سے متعلق امور،کنٹرول لائن متاثرین سے متعلق معاملات سے متعلق آگاہ کیا۔دریں اثناپاکستان کے مختلف گرجا گھروں کے بشپس کے وفدنے عمران خان سے ملاقات کی اور انہیں وزیر اعظم منتخب ہونے پر مبارکباد دیتے ہوئے کہا کہ مسیحی برادری وزیراعظم کے وژن کو عملی جامہ پہنانے کے لیے ان کا بھرپور ساتھ دے گی۔وفد سے گفتگو کرتے ہوئے عمران خان نے کہا ہے کہ پاکستان کا آئین تمام شہریوں کو ذات، رنگ یا نسل سے قطع نظر یکساں حقوق فراہم کرتا ہے، حکومت اقلیتوں کے حقوق کا تحفظ اور قومی زندگی میں شرکت کے لیے برابر مواقع کو یقینی بناتی رہے گی۔ وفاقی وزیر برائے آبی وسائل فیصل واوڈا نے بھی منگل کو وزیراعظم سے ملاقات کی اور وزارتی امور کے بارے میں بریفنگ دی۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ