بلغاریہ میں کرپشن کا پردہ فاش کرنے والی خاتون صحافی کا بہیمانہ قتل

195

بلغاریہ میں ایک نوجوان خاتون صحافی کی جانب سے بدعنوانی بے نقاب کرنے کی کوشش اس کے لیے جان لیوا ثابت ہوئی۔

عرب ٹی وی کےمطابق “ویکٹوریا میرین نوا” کو ہفتے کے روز دیائے دینوب کے کنارے پر واقعے “Ruse ” نامی شہر میں بے رحمی کے ساتھ قتل کردیا گیا۔

پولیس کی جانب سے ابتدائی تحقیقات میں بتایا گیا ہے کہ ویکٹوریا میری نوا کے قتل کی اصل سبب ایک مالی بدعنوانی کے اسکینڈل کی ویڈیو بنانا بنا ہے۔ اس نے بلغاریا میں یورپی یونین کے فنڈز سے جاری ایک ترقیاتی منصوبے میں ہونے والی کرپشن کاپتا چلانے کے بعد اس کے ثبوت کے لیے ایک ویڈیو تیار کی تھی

تحقیقات سےمعلوم ہوا ہے کہ صحافی کو اغواء کرنے کے بعد اسے جنسی تشدد کا بھی نشانہ بنایا گیا۔ اس کے بعد اس کے سرمیں بھاری چیز مار کر کچل دیا گیا۔ اس کے ساتھ ساتھ اس کا گلا بھی گھونٹا گیا ہے۔

 بلغاریہ کے وزیر داخلہ Mladen Marinov نے صحافیوں کو بتایا کہ پولیس کو مقتول صحافی کی لاش ملی، اس کے جسم پر موجود کپڑے بری طرح پھٹ چکے تھے۔ اس کا جسم بری طرح کچلا گیا تھا۔ اس کے پاس اس کا موبائل فون، چابیاں اور عینک میں سے کوئی چیز نہیں تھی۔ تاہم وزیرداخلہ کا کہنا تھا کہ ضروری نہیں کہ ویکٹوریا کی موت کرپشن بے نقاب کرنے کی وجہ سے ہوئی۔ روسہ شہر کے پراسیکیوٹر جنرل واقعے کے تمامم ممکنہ پہلوئوں سے تحقیقات کرائیں گے۔

Print Friendly, PDF & Email
حصہ